تعمیراتی منصوبوں پر حکم امتناعی سے قومی نقصان ہوتاہے: لاہورہائیکورٹ

تعمیراتی منصوبوں پر حکم امتناعی سے قومی نقصان ہوتاہے: لاہورہائیکورٹ
 تعمیراتی منصوبوں پر حکم امتناعی سے قومی نقصان ہوتاہے: لاہورہائیکورٹ

  


لاہور (نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس مسٹر جسٹس عمر عطا ءبندیال نے قرار دیا ہے کہ قومی نوعیت کے تعمیراتی اور معاشی منصوبوں پر حکم امتناعی جاری کرنے سے قوم کو زیادہ نقصان کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔فاضل عدالت نے فیصل آباد ملتان موٹروے کی تعمیر کے خلاف دائر درخواست کی سماعت کی۔نیشنل ہائی وے اتھارٹی کے وکیل عدالت میں پیش نہ ہوئے۔درخواست گزار فیروز شاہ گیلانی نے عدالت کو بتایا کہ فیصل آباداور ملتان کی شاہراہوں کی مرمت کی بجائے اربوں روپے سے نئی موٹروے تعمیر کی جا رہی ہے جو قومی خزانے پر بوجھ ہے۔انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ موٹروے کی تعمیر کے حوالے سے حکم امتناعی جاری کیا جائے اور یہ رقم تعلیم اور صحت کی مد میں خرچ کرنے کے بھی احکامات صادر کئے جائیں۔ عدالت نے حکم امتناعی کی استدعا مسترد کرتے ہوئے قرار دیا کہ قومی نوعیت کے تعمیراتی اور معاشی منصوبوں پر حکم امتناعی جاری کرنے سے قوم کو زیادہ نقصان کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

مزید : رئیل سٹیٹ