پنجاب حکومت صحت کے شعبہ میں انقلاب لانے میں ناکام رہی،مہرین

پنجاب حکومت صحت کے شعبہ میں انقلاب لانے میں ناکام رہی،مہرین

  

لاہور( لیڈی رپورٹر)سابق وزیر مملکت انصاف و پارلیمانی امور مہرین انور راجہ نے کہا کہ حکومت پنجاب کی شعبہ صحت میں انقلاب لانے کی کوشش بھی ناکام ہوگئی ، پنجاب میں روز شعبہ صحت کو مثالی بنانے کا اعلان کیا جاتا ہے مگر صورت حال یہ ہے کہ پنجاب کے15سو افراد کو دل کا ایک ڈاکٹر میسر اور 28سو مریضوں کیلئے صرف ایک بیڈ دستیاب ہے۔ انہوں نے کہا کہ صوبے کے بڑے سرکاری ہسپتالوں میں امراض قلب کے ڈاکٹروں کی شدید کمی سے دل کے مریض زندگی کی بازی ہارنے لگے۔

ملک کے30فیصد سے زائد شہر دل کی کسی نہ کسی بیماری کا شکار ہیں ۔لیکن سرکاری ہسپتالوں میں سہولتیں اور معالج ناپید ہیں۔پنجاب کے 2ہزار 4سو سے زائد بیسک ہیلتھ یونٹس،2سو 93رورل ہیلتھ یونٹس88تحصیل ہیڈکواٹرز ہسپتالوں میں کارڈیک مشینری، ڈاکٹر اور کارڈیک سرجنز کی دستیابی نہ ہونے کے برابر ہے پنجاب کی 12کروڑ سے زائد آبادی کیلئے اوسطاً15سو افراد کیلئے ایک ڈاکٹر اور 2ہزار8سو افراد کیلئے ایک بیڈ مختص کیا گیا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -