سعودی شہزادے ولید بن طلال کو دراصل کس الزام میں گرفتار کیا گیا؟ تفصیلات منظرعام پر

سعودی شہزادے ولید بن طلال کو دراصل کس الزام میں گرفتار کیا گیا؟ تفصیلات ...
سعودی شہزادے ولید بن طلال کو دراصل کس الزام میں گرفتار کیا گیا؟ تفصیلات منظرعام پر

  

ریاض (ڈیلی پاکستان آن لائن)سعودی حکام نے ارب پتی شہزادے ولید بن طلال کو کرپشن کے الزامات کے بعد گرفتار کیا گیا ہے ، ان پر منی لانڈرنگ کے الزامات کے عائد کئے گئے ہیں ۔

شہزادہ ولید بن طلال کی گرفتاری ، امریکی اخبار نے ایسی بات کہہ دی کہ جان کر ہی شاہ سلمان کی نیندیں اڑ جائیں گی

شہزادہ ولید بن طلال کے سوشل میڈیا کمپنی ٹوئٹر میں اچھے خاصے شیئرز ہیں جبکہ ان کے سرمایہ کار ادارے سٹی گروپ اور فلمیں بنانے والے ادارے اکیسویں سنچری فوکس میں بھی شیئرز ہیں اور 17.1بلین ڈالر ز کے اثاثے رکھنے والے سعودی گروپ کے سربراہ بھی ہیں۔ حکام کے مطابق انہوں نے غیر قانونی رقوم منتقل کرکے اپنے اثاثوں میں اضافہ کیا ہے، ملک میں کرپشن کی تحقیقات کے لئے سعودی عرب نے فرمانروا شاہ سلمان بن عبد العزیز کے حکم پر انسداد کرپشن کمیٹی قائم کردی ہے۔ ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز کی زیر قیادت قائم کردہ انسداد بدعنوانی کمیٹی میں مانیٹرنگ وانویسٹی گیشن اتھارٹی کے چیئرمین، قومی انسداد کرپشن اتھارٹی کے چیئرمین اور جنرل آڈٹ بیورو کے چیئرمین، اٹارنی جنرل اور اسٹیٹ سیکیورٹی کے سربراہ اس کمیٹی کے ارکان ہوں گے۔ کمیٹی کے قیام کا مقصد ملک میں کرپشن کا خاتمہ اور بدعنوانی میں ملوث حکومتی عمال، وزراء ، شہزادوں اور سرکردہ شخصیات کے خلاف سخت قانونی کارروائی عمل میں لانا ہے۔

مزید :

عرب دنیا -