ٹرین حادثہ ‘ ابتدائی رپورٹ تیار ‘ متعدد افسر معطل ‘ تحقیقات کا دائرہ وسیع

    ٹرین حادثہ ‘ ابتدائی رپورٹ تیار ‘ متعدد افسر معطل ‘ تحقیقات کا دائرہ ...

  



ملتان (نمائندہ خصوصی ‘ وقائع نگار ) سیکرٹری /چیئرمین ریلویزسلطان سکندر راجہ کو تیز گام ایکسپریس کے 31اکتوبرکے حادثے کی ابتدائی رپورٹ پیش کر دی گئی ہے جس کے تحت وزارت ریلوے نے فرائض میں غفلت برتنے والے کراچی اور سکھر ڈویژن میں کمرشل ٹرانسپوٹیشن گروپ اور ریلوے پولیس کے گریڈ 17 اور18کے چندا فسران کو معطل کر دیا ہے ۔ تفصیلات کےمطابق معطل ہونے والوں میں کراچی ڈویژن کے گریڈ18 کے ڈویژنل کمرشل آفیسر جنید اسلم ،سکھر ڈویژن کے گریڈ 17کے(بقیہ نمبر52صفحہ12پر )

اسسٹنٹ کمرشل آفیسر عابد قمر شیخ جو کہ ڈویژنل کمرشل آفیسر کے عہدے پر کام کر رہے تھے،سکھر ڈویژن کے اسسٹنٹ کمرشل آفیسرٹو راشد علی،کراچی ڈویژن کے اسسٹنٹ کمرشل آفیسر تھری کے عہدے پر کام کرنے والے احسان الحق،سکھر ریلوے پولیس کے گریڈ17کے ڈپٹی سپرنٹنڈٹ/بی دلاور میمن اور اس کے علاوہ کراچی ریلوے پولیس کے ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ /بی حبیب اللہ خٹک کے نام شامل ہیں۔ سانحہ تیز گام کے بعد ڈی ایس ریلوے ملتان امیرمحمدداﺅدپوتانے ریل گاڑیوں میں ممنوعہ سامان باالخصوص گیس سلنڈر پر مکمل پابندی عائد کرتے ہوئے ڈویژنل کمرشل آفیسر کی سربراہی میں خصوصی ٹیمیں تشکیل دے دیں،ٹیموں کی کاروائی،مختلف ریل گاڑیوں میں سفر کرتے مختلف مسافروں سے 10 سے زائد گیس سلنڈر قبضے میں لے لئے گئے،تفصیل کے مطابق سانحہ تیز گام کے بعد ڈی ایس ریلوے ملتان ڈویژن امیر محمد داود پوتا نے ریل گاڑیوں میں ممنوعہ سامان باالخصوص گیس سلینڈر ساتھ لے جانے پر پابندی لگاتے ہوئے ڈویڑنل کمرشل آفیسر نبیلہ اسلم کی سربراہی میں خصوصی ٹیمیں تشکیل دے دی تھیں جنہوں نے گزشتہ روز کاروائی کرتے ہوئے ریلوے ملتان ڈویژن سے گزرنے والی مختلف ٹرینوں پر چھاپے مارے اس دوران مختلف مسافروں سے 10 سے زائد سلینڈر ملنے پر قبضے میں لے لئے گئے،اس حوالے سے ڈی ایس ریلوے امیر محمد داود پوتا نے کہا کہ مسافروں سے خصوصی درخواست ہے کہ اپنی اور اپنے ساتھ سفر کرنے والے مسافروں کی خاطر ٹرین میں گیس سلنڈر سمیت کوئی بھی ممنوعہ سامان آتشگیر مواد لے کر ہرگز سفر نہ کریں بصورت دیگر سخت کاروائی عمل میں لائی جائیگی۔ وفاقی وزارت ریلوے نے سانحہ تیزگام کے باوجودریلوے نظام میں بہتری کی بجائے بغیرتحقیقات اہم عہدوں پرتبادلوں کی پالیسی پرعمل پیراہوگئی ہے۔سانحہ کے بعدعوامی اورسیاسی دباﺅکوکم کرنے کے لئے ملتان ڈویژن کونمبرون ڈویژن بنانے کے لئے دن رات ایک کرنے والے ڈویژنل سپرٹننڈنٹ ملتان امیرمحمدداﺅدپوتاکووزارت ریلوے رپورٹ کرنے کی ہدائت کرتے ہوئے شعبہ ٹریفک کمرشل گریڈ20کے آفیسر چیف ٹرانسپورٹیشن منیجرڈرائی پورٹ ریلوے ہیڈکوارٹرلاہورشعیب عادل کوڈی ایس ملتان لگانے کانوٹیفکیشن جاری کردیاہے۔ریلوے ملتان ڈویژن کے نئے ڈی ایس آئندہ ایک دوروزمیں اپنی نئی ذمہ داریاں سنبھال لیں گے۔ ڈی ایس ریلوے امیر محمد داود پوتا نے کہا ہے کہ سانحہ تیز گام کے المناک حادثے میں 72 افراد کی لاشیں جائے حادثہ سے ملی جبکہ 45 زخمیوں کو مختلف ہسپتالوں میں منتقل کیا گیا بعدازاں نشتر ہسپتال میں ایک زخمی نے دم توڑا جس کے بعد جاں بحق ہونے والوں کی مجموعی تعداد 73 ہو گئی ہے جبکہ 23 زخمی اب بھی مختلف ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں،ان کا مزید کہنا تھا کہ المناک حادثے میں جاں بحق ہونے والے 58 افراد کی میتیں اب بھی شیخ زید ہسپتال میں موجود ہیں جن کی شناخت کے لئے ڈی این اے کے نمونے بھجوا دئیے گئے ہیں جبکہ 15 قابل شناخت میتوں کو ورثا کے حوالے کر دیا گیا ہے اور ڈی این اے سمیت زخمیوں کے علاج معالجہ اور واپس روانگی تک اخراجات اور تمام تر تعاون ریلوے حکام کر رہے ہیں اور اس مقصد کے لئے سینئر میڈیکل افسران دن رات زخمیوں اور جاں بحق ہونے والے افراد کے لواحقین سے رابطہ میں ہیں۔ سانحہ تیزگام کے نشتر ہسپتال ملتان کے برن یونٹ میں زیر علاج چار زخمی مریضوں کی حالت میں معمولی بہتری آئی ہے جبکہ برن یونٹ میں زیر علاج 46 سالہ عبدالرحمن 32 سالہ رضوان 36 سالہ مختیار اور 36 سالہ رفیق کی حالت میں بھی معمولی بہتری آئی ہے۔ ایک مریض کا جنرل سرجری وارڈ میں علاج جاری ہے،مجموعی طور پر پانچ زخمی تاحال نشتر ہسپتال زیر علاج ہیں۔سانحہ تیز گام کے 9 زخمی نشتر ہسپتال میں زیر علاج تھے ،جس میں سے پینتالیس سالہ لیاقت نے دو روز قبل دم توڑ دیا تھا، جبکہ 3 زخمیوں زاہد اختر اور کاشف کو بھی دو روز قبل ڈسچارج کر دیا گیا تھا۔ سانحہ تیز گام کا خوف ریلوے مسافر معمولی سی جلنے کی بو آ نے پر چھلانگیں لگا بیٹھے ذرائع کے مطابق ڈاو¿ن کی علامہ اقبال ایکسپریس میں سوار خان پور کٹورہ کے رہائشی 2 مسافرمحمد عدنان اور محمد قاسم سفر کر رہے تھے ٹرین نے ڈیرہ نواب ریلوے اسٹیشن پر رکنے کے لئے بریکیں لگائیں تو پیل والے پھاٹک کے قریب بریکوں کی وجہ سے چنگاریاں نکلیں معمولی سی جلنے کی بو آ ئی تو دونوں مسافروں نے ٹرین سے چھلانگ لگا دی جس سے دونوں زخمی ہو گئے ذرائع کے مطابق انہیں تحصیل ہیڈکوارٹر اسپتال احمد پور شرقیہ داخل کروادیا گیا ہے۔جہاں ان کی حالت خطرے سے باہربتائی جاتی ہے۔ فیڈرل گورنمنٹ انسپکٹرآف ریلویز(ایف جی ائی آر)دوست علی لغاری آج سانحہ تیزگام کے زخمی ،مختلف ہسپتالوں میں زیرعلاج مسافروں اوردیگرافرادکے بیانات قلمبندکریں گے ۔بتایاجاتاہے کہ وہ جلنے والی بوگیوں کابھی معائنہ کریں کے مسافروں کے بیانات قلم بندکرنے سمیت مختلف شواہدبھی اکٹھے کریں گے۔ایف جی آئی آرآج صبح سویرے موسیٰ پاک ایکسپریس کے زیرملتان پہنچیں گے۔

ٹرین حادثہ

مزید : ملتان صفحہ آخر