نجی سکول عدالتی احکامات ماننے سے انکاری ہیں،مہر سلطانہ

نجی سکول عدالتی احکامات ماننے سے انکاری ہیں،مہر سلطانہ

  



پشاور(سٹی رپورٹر)پاکستان پیپلز پارٹی خواتین ونگ کی صوبائی سیکرٹری اطلاعات مہر سلطانہ نے کہا ہے کہ پرائیویٹ سکولز آج بھی پی ایس آر اے کے ریگیولیشنز اور نوٹیفیکیشنز، پشاور ہائیکورٹ اور سپریم کورٹ کے فیصلوں پر عمل درآمد کرنے سے انکاری ہیں اور جن سکولوں میں امتحانات منعقد ہوئے ہیں بچوں کو ڈیوز  کلئیر نا ہونے کے بہانے نتائج فراہم نہیں کئے جا رہے ہیں اور سکولز انتظامیہ والدین سے انتہائی بدسلوکی سے پیش آ رہے ہیں۔ انہوں نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ایم ڈی پی ایس آر  اے کو والدین اور بچوں کے مسائل سے تفصیلاً  آگاہ کر چکے ہیں۔ والدین کی طرف سے شکایات پر آج تک کوئی کمپلینٹ کمیٹی نہیں بنائی گئی ہے  اور نہ ہی کسی سکول کے خلاف کارروائی کی گئی ہے۔  انہوں نے کہا کہ ایم ڈی پی ایس آر اے فی الفورایک نوٹیفیکیشن جاری کرے تاکہ تمام پرائیویٹ سکولز اکتوبر اور نومبر کی فیس اپنے سکول ریکارڈ میں جنوری 2017 کے مطابق وصول کریں اور  تمام سکولز ستمبر 2019اور اس سے پہلے کی فیس وصول کرنے پر  اس وقت تک پابندی لگائیں جب تک سپریم کورٹ کے احکامات کے تحت پی ایس آر اے کی بنائی گئی فیس ریگیولیشن کمیٹی جنوری 2017سے لے کر ستمبر 2019 تک والدین کو واپس کئے جانے والے بقایاجات کا تعین نہیں کر لیتی۔ پی ایس آر اے کے حالیہ نوٹیفیکیشن کے تحت اب تمام پرائیویٹ سکولز میں وصول کی جانے والی فیس ہر سکول کے جنوری 2017 کی فیس سلپ کے مطابق لازم ہو چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تمام والدین پی ایس آر اے سے مطالبہ کرتے ہیں کہ جو سکولز ان احکامات سے لاعلمی یا ان کو لاگو کرنے سے انکار کرتے ہیں ان سکولز کے فنانس سیکشنز کو فوری طور پر سیل کرے اور والدین اپنے جائز اور قانونی حقوق کے لئے اپنی جدوجہد تب تک جاری رکھیں گے جب تک ہمیں یہ حقوق مل نہیں جاتے۔ انہوں نے کہا کہ ایکپا -آ ل خیبر پختونخوا ایسوسی ایشن اپنی تمام تجاویز اور مطالبات سے پی ایس آر اے کو آگاہ کر چکی ہے۔ پی ایس آر اے قانون کی پاسداری نہ کرنے والے سکولز کے خلاف سخت کارروائی کرنے میں مزید ٹال مٹول سے کام نہ لے  اور والدین کو ریلیف یقینی بنائے بصورت دیگر والدین انصاف اور حقوق کے حصول کیلئے ہر فورم پر آواز اٹھانے سمیت احتجاج کرنے سے گریز نہیں کرینگے۔ 

مزید : پشاورصفحہ آخر