مبینہ مغویہ ڈاکٹرکشف قیوم کاویڈیو بیان میں مرضی سے شادی کااعلان

      مبینہ مغویہ ڈاکٹرکشف قیوم کاویڈیو بیان میں مرضی سے شادی کااعلان

  

فیصل آباد(جنرل رپورٹر) فیصل آباد کے ایک سرکاری ہسپتال کی لیڈی ڈاکٹر کشف قیوم کے اس ویڈیو بیان کے منظر عام پر آنے کے بعد اس کیس نے ایک نیا رخ اختیار کرلیا ہے جس میں اس نے اظہار کیا ہے کہ اسے کسی نے اغواء نہیں کیا بلکہ وہ اپنی مرضی سے اپنے شوہر کاظم فاروق کے ساتھ ہے جس کے ساتھ اس نے 18ستمبر 2019ء کو نکاح کیا تھا جو میرا کزن بھی ہے میرے اس نکاح کی وجہ سے میرے والدین کے ساتھ کاظم فاروق کے اختلافات پیدا ہوگئے تھے جس کی وجہ سے مجھے اپنے والدین کا گھر چھوڑ کر اپنے شوہر کے ساتھ رہائش اختیار کرنا پڑی اور اب ہم محلہ مبارک پورہ مزنگ روڈلاہور میں رہائش پذیر ہیں،لیڈی ڈاکٹر کشف قیوم کے والدین کی طرف سے اس کے اغواء کا مقدمہ تھانہ مدینہ ٹاؤن فیصل آباد میں درج کرایا گیا ہے جس میں ملزمان کاظم فاروق وغیرہ نامزد کیے گئے ہیں اور اس مقدمہ میں ملزمان شامل تفتیش ہوئے اور نہ ہی مبینہ مغویہ نے پولیس کی کسٹڈی میں آکر کسی بھی عدالت میں اپنا کوئی بیان ریکارڈ کرایا ہے اگرچہ تھانہ مدینہ ٹاؤن پولیس کو مبینہ مغویہ کے ویڈیو بیان سے کچھ تفتیشی ریلیف ضرور ملا ہے مگر مدعی فریق اس ویڈیو بیان سے مطمئن نہیں کیونکہ ان کا مؤ قف ہے کہ مغویہ جب تک کسی عدالت میں زیر دفعہ 164اپنا بیان ریکارڈ نہیں کراتی اس وقت تک اس بیان کی نہ تو کوئی قانونی حیثیت ہے اور نہ اسے قانونی تسلیم کیا جاسکتا ہے۔

کشف قیوم 

مزید :

صفحہ آخر -