قرآن پر عمل کر کے ہم اپنی دنیا اور آخرت سنوار سکتے ہیں،مولانا اللہ وسایا

 قرآن پر عمل کر کے ہم اپنی دنیا اور آخرت سنوار سکتے ہیں،مولانا اللہ وسایا

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)سالانہ عظمت قرآن کانفرنس بسلسلہ دستار فضیلت جامعہ محمدیہ رائل سٹی فیروزوالالہ شاہدرہ میں ہوئی۔ کانفرنس کے مہمان خصوصی عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے مرکزی رہنما شاہین ختم نبوت مولانا اللہ وسایا تھے جبکہ کانفرنس میں جامعہ اشرفیہ کے استاذ الحدیث مولانا کفیل خان،بانی ادارہ ۃزا حاجی برکت علی، نائب امیر مجلس تحفظ ختم نبوت میاں محمدرضوان نفیس، مبلغ ختم نبوت لاہور مولانا عبدالنعیم، جامعہ محمدیہ چوبرجی مہتمم مولانا قاضی محمداویس، مدرسہ ہذا کے مہتمم مولانا محمدبلال، مولانا جنید بخاری، مولانا محمدقاسم گجر، مفتی حبیب اللہ نے شرکت کی۔ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا اللہ وسایا نے کہا کہ قرآن کریم عظیم معجزہ ہے۔

آن پر عمل کر کے ہم اپنی دنیا اور آخرت سنوار سکتے ہیں۔

 ، انہوں نے کہا پہلی آسمانی کتابیں آج اپنی اصلی حالت کے اندر موجود نہیں لیکن قرآن کریم آج سے چودہ سو سال پہلے جیسے نازل ہوا تھا وہ ویسے ہی ہمارے پاس موجود ہے، پہلی آسمانی کتب اور صحائف کا کوئی حافظ نہیں لیکن قرآن کریم لاکھوں کی تعداد میں حفاظ موجود ہیں یہ سب کچھ صدقہ ہے جناب کریم ﷺ کی ختم نبوت کا۔ اگر حضور اقدس ﷺ کے بعد کوئی نبی اور قرآن کے بعد کوئی کتاب آنا ہوتا تو آج قرآن کی تلاوت نہ ہورہی ہوتی بلکہ اس کتاب کی ہورہی ہوتی۔ مولانا کفیل خان نے کہا اللہ تعالیٰ نے نبی کریمؐ کو پوری کائنات کیلئے رحمت بنا کر بھیجا ہے۔ دنیا وآخرت کی کامیابی کیلئے ہمیں نبی کریمؐ کی تعلیمات پر عمل کرنا ہے قرآن والوں سے محبت کرو یہی محبت ہمیں جنت میں لے کر جائیگی۔ مبلغ ختم نبوت مولانا عبدالنعیم نے کہا کہ فرانس میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت انتہائی قابل مذمت ہے، ناموس رسالتؐ کیلئے ہر مسلمان اپنی جان قربان کرنے کو ہمہ وقت تیار ہے۔ موجودہ حالات میں امت مسلمہ کو متحد ہو کر اپنا کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے۔ ہماری سب سے بڑی طاقت باہمی اتحاد ہے اور آپؐ کی ذات اقدس سے عشق اس اتحاد کی بنیاد ہے۔ فرانس میں شائع کردہ گستاخانہ خاکوں اور فرانسیسی صدر کے مسلمانوں اور اسلام مخالف بیانات کی شدید ترین الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔ ناموس رسالتؐ کیلئے اپنی جان قربان کرنا ہر مسلمان ایک اعزاز سمجھتا ہے۔ ہماری بقاء و سلامتی ذاتِ نبی کریمؐ کے ساتھ دلی و گہری وابستگی میں ہی پنہاں ہے۔مولانا مفتی حبیب اللہ نے کہا کہ اسوہ حسنہ ہمارے لئے بہترین نمونہ ہے۔ نبی کریمؐ نے ہمیں نسلی، لسانی، گروہی، صوبائی، فرقہ ورانہ سمیت ہر طرح کے تعصبات سے دور رہنے کا درس دیا ہے۔پروگرام کے آخر میں ادارہ ہذا سے قرآن پاک مکمل حفظ کرنے والے طلبہ کرام حافظ عبدالرحمن بن مجید، حافظ نوراللہ، حا ظ عدنان، حافظ عثمان، حافظ رحمت، حافظ عبدالرحمن بن حاجی فرقان کی دستار بندی کی گئی۔ 

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -