کورونا سے مزید 18ہلاکتیں، خیبر پختونخوا کے 7اضلاع زیادہ متاثر، صوبائی وزرائے تعلیم کا اہم اجلاس آج ہو گا

        کورونا سے مزید 18ہلاکتیں، خیبر پختونخوا کے 7اضلاع زیادہ متاثر، صوبائی ...

  

  اسلام آباد،پشاور،لاہور(نیوزایجنسیاں) کورونا وائرس سے مزید 18افراد جاں بحق ہو گئے جسکے بعد اموات کی تعداد6867ہوگئی۔ پاکستان میں کورونا کے تصدیق شدہ کیسز کی تعداد 3 لاکھ 37 ہزار 573 ہوگئی۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے تازہ ترین اعدادوشمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 1313نئے کیسز رپورٹ ہوئے۔ کورونا وائرس کی دوسری لہرمیں خیبر پختونخوا کے 7 اضلاع لپیٹ میں آگئے، پشاور سمیت اپر چترال، مانسہرہ، ایبٹ آباد، صوابی، خیبر اور دیر بالا میں کیسز کی تعداد بڑھ گئی۔ صوبائی حکومت نے سخت ہدایات جاری کر دیں۔ صوبائی محکمہ صحت کی رپورٹ کے مطابق کورونا کی دوسری لہر سے صوبائی دارالحکومت پشاور میں کورونا کے مثبت کیسز کی تعداد 197 ہوگئی ہے، مانسہرہ 118، ایبٹ آباد 75، اپر چترال میں 74، ہری پور 40، خیبر 33، صوابی 18 اور دیربالا میں کیسز کی تعداد 15 تک پہنچ گئی ہے۔ کورونا وائرس کے کیسز دوبارہ سامنے آنے پر صوبہ بھر کے ہسپتالوں میں انتظامات شروع کر دیئے گئے ہیں، آئسولیشن وارڈز کو فعال کر دیا گیا۔ لیڈی ریڈنگ ہسپتال میں کورونا سے متاثرہ 3 مریض زیر علاج ہیں۔ ہسپتال میں 240 بیڈرز پر مشتمل کمپلیکس جبکہ 40 بیڈرز کا الگ آئسولیشن وارڈ بھی مکمل فعال ہے۔ خیبرپختونخوا میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 800 کے قریب ہے جبکہ اب تک مجموعی کیسزکی تعداد 40 ہزار کے قریب پہنچ گئی ہے۔وفاقی وزیر اسد عمر کی زیر صدارت نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کا اجلاس ہوا جس میں کورونا کی دوسری لہر کے پیش نظر حکمت عملی پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اجلاس کو کورونا ایس او پیز پر عمل درآمد سے متعلق بریفنگ دی گئی،اجلاس میں کاروباری اوقات کار میں کمی کے بعد کی صورتحال کا جائزہ لیا گیا،اجلاس میں سمارٹ لاک ڈاؤن والے علاقوں میں ایس او پیز حکمت عملی پر بھی بریفنگ دی گئی۔اہم فیصلوں کے لئے بین الصوبائی وزرائے تعلیم کااجلاس آج (جمعرات) کو منعقد ہوگا۔ اجلاس کی صدارت وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کریں گے جبکہ صوبائی وزرائے اور اعلیٰ حکام بذریعہ ویڈیو لنک اجلاس میں شریک ہوں گے۔ بتایا گیا ہے کہ اجلاس میں کورونا وائرس کی صورتحال، موسم سرما کی چھٹیاں اور آٹھویں بورڈ کا امتحان لینے یا نہ لینے جبکہ تعلیمی سال کو یکم اپریل کی بجائے یکم اگست تک بڑھانے کے فیصلوں پر غور اور بعد ازاں حتمی اعلان کیاجائے گا۔

کورونا وائرس

مزید :

صفحہ اول -