پاک افغان باہمی تجارت کی راہ میں رکاوٹوں کو دور کیا جائے: شیر باز بلور

پاک افغان باہمی تجارت کی راہ میں رکاوٹوں کو دور کیا جائے: شیر باز بلور

  

 پشاور(سٹی رپورٹر)سرحد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر شیر باز بلور نے پاک افغان باہمی تجارت کی راہ میں درپیش رکاوٹوں کو دور کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان باہمی تجارتی حجم کو 5 ارب ڈالرز تک بڑھانے کی کافی گنجائش موجود ہے۔ تاہم دونوں ممالک کی حکومتوں کو دوطرفہ تجارت میں اضافہ کے لئے مشترکہ اقدامات کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سرحد چیمبر نے حالیہ پاک افغان باہمی تجارت اور ٹرانزٹ ٹریڈ فورم 2020 میں دونوں ہمسایہ ممالک کے درمیان تجارت کی راہ میں درپیش مسائل کے حل کے لئے قابل عمل تجاویز پیش کیں ہیں جس پر من وعن عمل درآمد کرکے بارڈرز کے دونوں اطراف کی بزنس کمیونٹی کی مشکلات دور کرنے کے ساتھ ساتھ باہمی تجارت اور ٹرانزٹ ٹریڈ میں اضافہ کیا جاسکتا ہے۔ سرحد چیمبر کے صدر شیر باز بلور نے افغانستان سمیت علاقائی تجارت کو وسعت دینے کے لئے عملی اقدامات پر زور دیا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز پشاور میں تعینات افغان ٹریڈ کمشنر فواد آرش کے ساتھ ملاقات کے دوران کیا۔ اس موقع پر سرحد چیمبر کے سینئر نائب صدر انجینئر منظور الہی اورنائب صدر جنید الطاف بھی موجود تھے۔ سرحد چیمبر کے صدر شیر باز بلور نے تجویز پیش کی کہ دونوں ممالک کی بزنس کمیونٹی کے لئے ایک مشترکہ لائحہ عمل طے کریں اور اس مقصد کے لئے سرحدچیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری سے مستقبل کے حوالے سے مشاورت بھی کی جائے تاکہ حقیقی بزنس کمیونٹی کے ساتھ مشاورت سے پاک افغان باہمی تجارت کو بڑھانے میں سود مند اور مثبت نتائج  سامنے آسکیں۔ انہوں نے اسلام آباد اور کابل پر زور دیا کہ وہ دونوں ممالک کی بزنس کمیونٹی کے مسائل کے حل کے لئے عملی اقدامات اٹھائیں اور باہمی تجارت اور ٹرانزٹ ٹریڈ کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان باہمی تجارتی حجم کو 5 ارب ڈالرز تک بڑھانے کی گنجائش موجود ہے تاہم دونوں ممالک کی حکومتیں اس حوالے سے سنجیدگی سے اقدامات اٹھائیں۔ انہوں نے مزید کہاکہ حالیہ باہمی اور ٹرانزٹ ٹریڈ فورم 2020 کے ذریعے دونوں ممالک کے درمیان تجارت کی راہ میں رکاوٹوں کو دور کرنے اور بارڈرز کے دونوں جانب کی بزنس کمیونٹی کومزید قریب لانے میں ایک اہم کردار ادا کیا ہے۔ سرحد چیمبر کے صدر شیر باز بلور نے کہاکہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان باہمی تجارت کے فروغ خطے میں ترقی اور پائیدار امن کی ضمانت ہے۔ اس لئے اسلام آباد اور کابل سنجیدگی سے تجارت کی راہ میں درپیش رکاوٹوں کو دور کرنے کے لئے اقدامات کریں۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان اور افغانستان کے مابین باہمی تجارت اورٹرانزٹ ٹریڈ کے فروغ سے ملکی معیشت مستحکم ہونے کے ساتھ ساتھ وسطی ایشیائی ممالک کے ساتھ بھی تجارت کو وسعت ملے گی جس سے ملکی برآمدات میں بھی نمایاں اضافہ ہوگا۔ انہوں نے دونوں ممالک کی حکومتوں سے مطالبہ کیا کہ پاکستان اور افغانستان کی بزنس کمیونٹی کوایک دوسرے کے مزید قریب لانے کیلئے اس سلسلہ کو مستقبل میں بھی جاری رکھا جائے۔اس ضمن میں اجلاس کے دوران پاکستان بالخصوص خیبر پختونخوا اور افغانستان کے کاروباری افراد کے درمیان بزنس ٹو بزنس میٹنگ جائنٹ صنعتی نمائشوں کے انعقاد تجارتی وفود کے تبادلہ اور حکومتی سطح پر پاک افغان تاجروں کے مسائل کو بھرپور انداز میں اٹھانے پر بھی اتفاق رائے ہوا ہے۔ اجلاس سے سرحد چیمبر کے سینئر نائب صدر انجینئر منظور الہی اور نائب صدر جنید الطاف نے بھی خطاب کیا اور پاک افغان باہمی تجارت اور ٹرانزٹ ٹریڈ بڑھانے اور دونوں اطراف سے تجارت کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے کے لئے مختلف تجاویز پیش کیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -