294معطل قومی رضاکاروں کو بحالی کیلئے ہائیکورٹ سے رجو ع: رٹ دائر

294معطل قومی رضاکاروں کو بحالی کیلئے ہائیکورٹ سے رجو ع: رٹ دائر

  

 پشاور(نیوز رپورٹر) پشاور سے فارغ کئے گئے 294قومی رضاکاروں نے بحالی کیلئے پشاور ہائیکورٹ سے رجوع کرلیا ہے جبکہ اس حوالے سے دائر رٹ میں انہیں معاوضہ کی فوری ادائیگی کرنے کی بھی استدعا کی گئی ہے۔ عباس خان سنگین ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائر رٹ پٹیشن میں آئی جی پی، سی سی پی او، چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا، ڈی سی پشاور ودیگر کو فریق بنایا گیا ہے جس میں اجمل خان ودیگر درخواست گزاروں نے موقف اپنایاہے کہ انہیں پاکستان قومی رضاکار پولیس میں رولزکے تحت بھرتی کیاگیاتھاجن کی خدمات ویسٹ پاکستان قومی رضاکار آرڈیننس 1965کے تحت حاصل کی جاتی ہیں لیکن 22جون 2020کو ان رضاکاروں کوبلاکسی معاوضے فارغ کردیا گیاتاکہ مبینہ طور پر من پسند افراد کو لیاجاسکے انہوں نے کورونااور پولیوکے علاوہ قدرتی آفات کے دوران بھی پولیس کیساتھ ڈیوٹیاں انجام دیں اورکئی اس دوران شہیداور زخمی بھی ہوئے وکیل عباس خان سنگین نے رٹ میں مزید موقف اپنایا ہے کہ ان رضاکار وں کوکافی عرصہ تک کام کے باوجود معاوضہ کی ادائیگی بھی نہیں کی گئی اورانکا تعلق غریب گھرانوں سے ہے جبکہ انکے نام پر بیرون فنڈزلئے گئے جس میں ان کاحق بنتا ہے کہ انہیں معاوضہ دیاجائے رٹ کے مطابق ان رضاکاروں کاپولیس سروسز میں تجربہ،اہلیت اورتربیت ہے لہذا بھرتیوں میں انہیں فوقیت دینی چاہیے عدالت سے انکی خدمات کے پیش نظرانہیں فارغ کرنیکا اقدام کالعدم قراردینے اور انہیں فوری معاوضے کی ادائیگی کی بھی استدعا کی گئی ہے۔دورکنی بنچ کیجانب سے رٹ پٹیشن پر جلدسماعت متوقع ہے۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -