بلدیاتی انتخابات، خواتین کے ٹرن آؤٹ بڑھانے میں سول سوسائٹی کردار ادا کرے: ہارون شنواری

  بلدیاتی انتخابات، خواتین کے ٹرن آؤٹ بڑھانے میں سول سوسائٹی کردار ادا کرے: ...

  

 پشاور(سٹی رپورٹر)خیبرپختونخوا میں بلدیاتی انتخابات میں  مرد حضرات کے ساتھ خواتین کی ٹرن آوٹ بڑھانے کے لئے سول سوسائٹی اپنا کردار ادا کریں۔ ان خیالات کا اظہار جائینٹ صوباء الیکشن کمشنر خیبر بختونخوا ہارون خان شینواری نے اپنے دفتر میں یو آر ڈی او کے ایک وفد سے باتیں کرتے ہوئے کیا۔ وفد کی قیادت ایگزیکٹو ڈائریکٹر ظہیر خٹک کر رہے تھے۔  دیگر شرکاء میں یو آر ڈی او کی پراجیکٹ منیجر ناہید خٹک، راشد خٹک اور  ایس ایم شاہد وسیم شامل تھے۔ ہارون خان شینواری  نے کہا کہ الیکشن کمیشن خواتین اور مرد حضرات کے ووٹوں میں فرق کوختم کرنے کے لئے Female NIC and Voter Registration Campaign  کے چوتھے مرحلے کا جلد آغاز کر رہا ہے۔ تاکہ شناختی کارڈ سے محروم خواتین کو شناختی کارڈ بنوانیمیں موبائل وین کی سہولت فراہم کرنے کے لئے کاوشیں کی جاسکیں۔ انہوں نے کہا۔ کہ خواتین کے بطور رجسٹریشن کے ساتھ ان کو پولنگ اسٹیشن آکر اپنا حق رائے دیہی استعمال کرنے پر آمادہ کرنیکی ضرورت ہے۔ ہارون شینواری نے کہا۔ کہ صوبہ میں بلدیاتی انتخابات کے لئے تیاریاں کی جارہی ہیں۔ اور اس سلسلے میں سات ڈویژنل اضلاع کے علاوہ تمام اضلاع میں حلقہ بندیوں کی حتمی فہرست جارکردی گء ہے۔ ان انتخابات میں  خواتین کے ساتھ ساتھ خواجہ سراء کے بطور ووٹر رجسٹریشن اور شناختی کارڈ بنوانے میں سہولت فراہم کرنے کے لئے  بھی کوشاں ہے۔  انہوں نے کہا۔کہ خواجہ سراء کو شناختی کارڈ ملنے پر وہ ووٹر بننے کے اہل ہوسکتے ہیں۔   انہوں نے کہا۔ کہ الیکشن کمیشن معاشرے کے تمام طبقات  کی انتخابی عمل میں شمولیت کو یقینی بنانے کے لئے کوشاں ہیں۔ انہوں نے سول سوسائٹی کے اس ضمن میں فعال کردار کی تعریف کی۔ اس موقع پر ظہیر خٹک  نے بتایا۔ کہ خواتین کی رجسٹریشن مہم کے لئے ان کے ادارے کو پشاور ضلع میں پراجیکٹ ملا ہے۔  جس کے لئے انہیں الیکشن کمیشن اور نادرا کے ساتھ ملکر مخصوص علاقوں میں خواتین کے شناختی کاربنوانے میں کام کا موقع ملیگا۔ انہوں   نے الیکشن کمیشن کے جینڈر ونگ کے کردار کو سراہا۔ انہوں  نے خواتین کو شناختی کارڈ کے حوالہ سے اپنے مسائل سے آگاہ کیا۔۔۔ اور  بتایا کہ آئیندہ بلدیاتی انتخابات میں خواتین کو بطور ووٹر اور انتخابات میں بطور امیدوار زیادہ سے زیادہ شرکت کرنے کے بارے میں خصوصی مہم چلاء جائیگی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -