کورونا وائرس کا شکار ہونے والے بسم اللہ خان میں علامات کب ظاہر ہوئیں اور ان کا ٹیسٹ کب کیا گیا؟ انتہائی حیران کن تفصیلات منظرعام پر آ گئیں

کورونا وائرس کا شکار ہونے والے بسم اللہ خان میں علامات کب ظاہر ہوئیں اور ان ...
کورونا وائرس کا شکار ہونے والے بسم اللہ خان میں علامات کب ظاہر ہوئیں اور ان کا ٹیسٹ کب کیا گیا؟ انتہائی حیران کن تفصیلات منظرعام پر آ گئیں
کیپشن:    سورس:   Twitter

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان میں گزشتہ چند ہفتوں سے کورونا کے وار میں اضافہ دیکھا گیا ہے اور وائرس کی دوسری لہر میں تیزی آنے پر عوام کو محتاط رہنے کی ہدایت دی جا رہی ہے جبکہ کچھ شہروں میں سمارٹ لاک ڈاﺅن بھی کر دیا گیا، یہ صورتحال ملک میں کرکٹ کیلئے بھی اچھا شگون نہیں جس کا ثبوت کرکٹر بسم اللہ خان کا کورونا وائرس میں مبتلا ہونا ہے لیکن حیرت کی بات یہ ہے کہ کچھ علامات نظر آنے کے باوجود بھی چوتھے روز تک ان کا ٹیسٹ نہیں کرایا گیا۔ 

تفصیلات کے مطابق قائد اعظم ٹرافی کے دوسرے راﺅنڈ سے قبل سندھ کے 9 کھلاڑیوں میں وائرس کی علامات نظر آئیں جس کے باعث خوف کی لہر دوڑ گئی لیکن خوش قسمتی سے سب کی رپورٹس منفی آ گئیں تاہم طبیعت ناساز ہونے پر میر حمزہ کو گھر واپس بھیج دیا گیا تھا۔ گزشتہ روز تصدیق ہوگئی کہ بلوچستان کے وکٹ کیپر بیٹسمین بسم اللہ خان کے کورونا ٹیسٹ کا نتیجہ مثبت آ گیا، حیرت کی بات ہے کہ سدرن پنجاب سے میچ میں کچھ علامات نظر آنے کے باوجود چوتھے روز تک ان کا ٹیسٹ نہیں کرایا گیا، حالت خراب ہونے اور علامات واضح ہونے کے بعد متاثرہ کرکٹر7گھنٹے تک اسپتال کے آئیسولیشن وارڈ میں رہے۔

دوسری جانب متبادل کھلاڑی عدنان اکمل کو ان کی جگہ میدان میں اتار دیا گیا، انگلش کاﺅنٹی میں اس نوعیت کا واقعہ ہونے پر میچز روک کر تمام کرکٹرز اور رابطے میں رہنے والے افراد کی سکریننگ کی جاتی رہی ہے مگرپاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے میچ جاری رکھنے کو ترجیح دی، اس وقت بسم اللہ خان ہوٹل کے مخصوص کمرے میں قرنطینہ میں ہیں اور ڈاکٹرز مستقل ان کا معائنہ کر رہے ہیں لیکن ابھی تک یہ واضح نہیں ہو سکا کہ وکٹ کیپر بیٹسمین کس ذریعے سے موذی وائرس کا شکار ہوئے۔ 

بسم اللہ خان کا ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد قائد اعظم ٹرافی کے باقی میچز پر سوالیہ نشان لگ گیا تھا کیونکہ تمام 6ٹیموں کے کھلاڑی ایک ہی ہوٹل میں رہائش پذیر ہیں لیکن پی سی بی کی جانب سے جاری بیان میں واضح کیا گیا ڈومیسٹک ٹورنامنٹ میں شریک تمام 132 کھلاڑیوں اور معاون سٹاف ارکان کے کورونا ٹیسٹ منفی آ گئے، وہ جمعے سے شروع ہونے والے میچز میں شرکت کریں گے۔

یاد رہے کہ قائد اعظم ٹرافی کے تیسرے راﺅنڈ کے بعد 11روز کا وقفہ ہو گا جس دوران پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) 5کے باقی میچز بھی 14، 15 اور 17 نومبر کو کراچی میں ہی شیڈول ہیں، اس سے قبل مارچ میں صرف ایک غیر ملکی کرکٹر ایلکس ہیلز میں علامات پائے جانے پر ہی ایونٹ کے باقی میچز ملتوی کر دئیے گئے تھے۔ پی سی بی کی پریس ریلیز میں ڈائریکٹر ہائی پرفارمنس ندیم خان نے کہاکہ ڈومیسٹک کرکٹ مشکل حالات میں کھیلی جا رہی ہے،ہم کورونا ایس او پیز پر عمل درآمد کرنے والے ایونٹ میں شریک تمام افراد کے شکر گزار ہیں۔

مزید :

کھیل -