امتحانات کے بعد لمز میں آن لائن کلاس، طلباءنے اپنے کیمرے آن کیے تو ایسے مناظر کہ کوئی بھی گھبرا جائے، تصاویر وائرل

امتحانات کے بعد لمز میں آن لائن کلاس، طلباءنے اپنے کیمرے آن کیے تو ایسے مناظر ...
امتحانات کے بعد لمز میں آن لائن کلاس، طلباءنے اپنے کیمرے آن کیے تو ایسے مناظر کہ کوئی بھی گھبرا جائے، تصاویر وائرل

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) لاہوریونیورسٹی آف منیجمنٹ سائنسز(لمز) میں امتحانات کے بعد دوبارہ آن لائن کلاسزشرو ع ہوگئی ہیں لیکن طلباءنے جب اپنے کیمرے آن کیے تو ایسے مناظر دیکھنے کو ملے کہ ایک ٹیچر یہ کہانی شیئرکیے بناءنہ رہ سکے ۔ 

ایک فیس بک پیج نے تصاویر شیئرکرتے ہوئے لکھا کہ   ”آج لمز میں امتحانات کے بعد آن لائن کلاس ہوئی ، یہ سب سے زیادہ یاد رہ جانیوالی کلاس تھی، جب طلباءنے اپنے کیمرے آن کیے تو تقریباً دل کا دورہ ہی پڑنے والا تھا، ایسے لمحات مجھے احساس دلاتے ہیں کہ ایک ٹیچر ہونا کتنے اعزاز کی بات ہے ، میں اس دنیا کی خوش قسمتیوں کی تجارت نہیں کروں گا۔ آپ لوگوں کا شکریہ “۔

ممکنہ طورپر یہ روپ طلباء نے بطور احتجاج دھارا کیونکہ اس سے قبل لاہوریونیورسٹی آف منیجمنٹ سائنسز (لمز) کے طلباءاحتجاج بھی کرتے رہے اور زوم کے ایک سمسٹر کی سات لاکھ روپے تک فیس اداکرنیوالوں نے یونیورسٹی اور لائبریری کھولنے کا مطالبہ کیا۔

اس وقت لاہور کے پوش علاقے میں موجود لمز کے باہراحتجاج کرتے ہوئے طلباءنے بتایا کہ یونیورسٹی کھولنے کے لیے احتجاج کررہے ہیں، ہمارے مستقبل کا سوال ہے ، آن لائن سمسٹر سے اس طرح کامیابی نہیں مل رہی، اس کی کوالٹی اور کلاس لینے کا معیار ٹھیک نہیں، میٹنگ ایک کلاس نہیں ہوتی، یہ مسئلہ کسی ایک آدھ طالبعلم کیساتھ نہیں بلکہ ہر طالبعلم کا یہی مسئلہ ہے ۔ایک سوال کے جواب میں ایس ایس سی کے سٹودنٹ نے بتایا کہ وہ سات لاکھ روپے زوم سمسٹر کے لیے ادا کرچکے ہیں۔

طلباءنے اپنے مطالبات کے حق میں نعرہ بازی کی اور بینرز اٹھارکھے تھے جن پر   ’لمز کھولو‘آن لائن کلاسز نامعلوم‘یونیورسٹی آن لائن ، دماغی صحت آف لائن‘ کے نعرے درج تھے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -