’پی ٹی آئی کے ساتھ اتحاد کے معاہدے میں وزیر اعظم کے کھانے کھانا شامل نہیں‘ مونس الہٰی نے واضح اعلان کردیا

’پی ٹی آئی کے ساتھ اتحاد کے معاہدے میں وزیر اعظم کے کھانے کھانا شامل نہیں‘ ...
’پی ٹی آئی کے ساتھ اتحاد کے معاہدے میں وزیر اعظم کے کھانے کھانا شامل نہیں‘ مونس الہٰی نے واضح اعلان کردیا
کیپشن:    سورس:   Instagram

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) مسلم لیگ ق کے رہنما مونس الہٰی کا کہنا ہے کہ ق لیگ اور تحریک انصاف کے اتحاد کے معاہدے میں وزیر اعظم کے کھانے کھانا شامل نہیں ہے۔

ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں مونس الہٰی نے کہا کہ ’ ہمارا پی ٹی آئی سے اتحاد ووٹ کی حد تک ہے، ہمارے معاہدے میں عمران خان کے کھانے کھانا شامل نہیں۔‘

خیال رہے کہ جمعرات کو وزیر اعظم عمران خان نے اتحادی جماعتوں کو ظہرانہ دیا تاہم ق لیگ نے اس میں شرکت نہیں کی۔

ق لیگ کے سینئر رہنما طارق بشیر چیمہ کا کہنا ہے کہ آج تک فیصلہ سازی کے کسی عمل میں شریک نہیں کیاگیا، مشاورت ہوتی ہے اور نہ ہی کسی فیصلے پر اعتماد میں لیاجاتاہے ،ق لیگ وزیراعظم کے لیے اہم نہیں تو پھر ظہرانے میں جانے کا کیا فائدہ ؟

ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم کسانوں کے ساتھ کھڑے ہیں، ان کے مفادات کا تحفظ کرنا ہے ، لوکل باڈیز ایکٹ اور کسانوں کے معاملات پر اعتماد میں نہیں لیا گیا، کسانوں کے بارے میں حکومتی پالیسی درست نہیں اور ق لیگ کی قیادت کو حکومت سے تحفظات ہیں۔

مزید :

قومی -