آپ کو بھی مختلف بیماریاں لاحق ہونے کا خدشہ ہے؟اگر ہاں تو اپنی ہتھیلیوں کا رنگ دیکھ کر پتہ لگائیں،مفید معلومات

آپ کو بھی مختلف بیماریاں لاحق ہونے کا خدشہ ہے؟اگر ہاں تو اپنی ہتھیلیوں کا ...
آپ کو بھی مختلف بیماریاں لاحق ہونے کا خدشہ ہے؟اگر ہاں تو اپنی ہتھیلیوں کا رنگ دیکھ کر پتہ لگائیں،مفید معلومات

  

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک)نظام ِخون میں جو بھی خرابی ہو اس کا اثر جہاں فوری طور پر ہمارے جسم پر پڑتا ہے وہیںدورانِ خون میں خرابی کے اثرات مختلف علامتوں کی صورت میں ہمارے جسم پر ظاہر ہونا شروع ہو جاتے ہیں۔ مثلاً اگر خون کے بہاﺅ میںکوئی چھوٹی رکاوٹ بھی آگئی تو وہ رکاوٹ نہ صرف خون کو خراب کرے گی بلکہ جسم کے دوسرے حصوں کو بھی متاثر کرے گی اور اُن حصوں کی کارکردگی ٹھیک نہیں رہے گی۔ 

اسی طرح اگر جگر صحیح تناسب میں صاف خون مہیا نہیں کرتا یا نہیں بناتا تو چہرا، ہاتھ اور جسم پیلا ہونا شروع ہو جائے گا اور آنکھوں کی چمک جاتی رہے گی ۔ ناخن جو پہلے پیا زی رنگت لیے ہوئے تھا۔ اپنا رنگ بدلنا شروع ہو جائیں گے۔ دماغ اور دل پریشر میں آجا ئیں گے۔ اس ساری بات سے ظاہر ہوتا ہے کہ خون کو ملاوٹ اور خرابیوں سے پاک رکھنا کس قدر ضروری ہے۔

نئی بات میگزین میں ڈاکٹر جاوید مرزا نے لکھا کہ دورانِ خون میں خرابی، تبدیلی یا اس میں کسی بھی بیماری کے جراثیموں کے موجود ہونے سے ہاتھ پر مختلف نشانیا ں اور علامات ظاہر ہونا شروع ہو جاتی ہیں، جن کے بارے میں اگر ہم جان لیں تو بروقت بیماری کا پتہ چلایا جا سکتا ہے اور اس سے پہلے کہ بیماری جڑ پکڑ کر پوری طرح حملہ آور ہو، اُس کا علاج اور سد باب کیا جا سکتا ہے۔

1 ۔ پیازی رنگت والی ہتھیلی

ایک اچھی صحت والے شخص کے ہاتھ پیا زی رنگت میں ہونے چاہئیں۔ جب رنگت پیازی ہو تو اس کا مطلب ہے کہ اس کے حامل کا خون صحت مند ہے اور دورانِ خون ٹھیک ہے۔ جسم اور خون میں پروٹینز کی کمی نہیں۔ اگر ہاتھ کی رنگت پیازی نہ ہو تو یہ اس بات کی علامت ہے کہ صحت اور خون کا توازن ٹھیک نہیں۔

2 ۔ نیلا ہٹ والی ہتھیلی جو گرم محسوس ہو

اگر ہاتھ نیلا ہٹ والا رنگ لیے ہوئے ہوں اور ساتھ ساتھ گرم بھی محسوس ہوں تو دورانِ خون میں نقص ہے۔ کیا نقص ہے؟

اس کے لیے غور کریں کہ نیلا ہٹ کا ہتھیلی میں تناسب کیا ہے؟

ایسے ہاتھ عام طور پر ان لوگوں میں ہوتے ہیں جن کی خون کی شریانوں میں رکاوٹ اور خون کے بہاﺅ میں کمزوری ہو۔ ایسی صورت میں ہاتھ نیلا ہٹ کے ساتھ ساتھ گرم بھی محسوس ہونا چاہیے۔

اگر ایک ہاتھ میں نیلا ہٹ ہو اور وہ گرم بھی محسوس ہو لیکن دوسرا ہاتھ ایسا نہ ہو تو نیلا ہٹ اور گرمائش والے ہا تھ کی طرف کی شریانوں میں رکاوٹ ہے اور فوری طور پر معالج سے رجوع کر نا چاہیے۔

اگر ہاتھ نیلا ہٹ مائل تو ہو لیکن ٹھنڈا ہو تو سارے جسم کی خون کی شریانوں مین رکاوٹ نہیں صرف اس ہاتھ میں ہے لیکن جب ہاتھ نیلا ہٹ کے ساتھ ساتھ گرم بھی ہو تو مسئلہ سیریس (serious) ہے۔

3۔ پیلا ہٹ والے ہاتھ

پیلا ہٹ زدہ ہاتھ خون میں کمی کی طرف اشارہ کرتے ہیں۔ اگر ہتھیلی کی رنگت پیلی دکھائی دیتی ہے تو کنفرم کرنے کے لیے ہاتھ کو پورا کھولیں۔ اس سے ہتھیلی کی لکیریں زیادہ واضح ہو جائیں گی۔ اگر ہتھیلی کی لکیریں بھی پیلا ہٹ ظاہر کریں تو خون کی کمی کنفرم ہے۔ یرقان کے مریضوں کے ہاتھ بھی پیلے ہوتے ہیں ۔

بہت زیادہ سگریٹ پینے والے لوگوں کی اُنگلیاںبھی پیلا ہٹ زدہ ہوتی ہیں۔ ان کو ہتھیلی کی رنگت سے مطابقت نہیں کرنی چاہیے۔ کبھی کبھار (بہت کم کیسز میں) کچھ لوگو ں کو کوئی بیماری نہیں ہوتی لیکن ہتھیلی پیلی نظرآتی ہے جبکہ خون کی کمی نہیں ہوتی۔ ایسے لوگ روحانی اور ذہنی طور پر بیمار، بہت ٹھنڈے دل ودماغ کے مالک۔ بہت کم جذبات رکھنے والے اور عام طور پر خشک مزاج ہوتے ہیں۔

سرخ رنگت کے ہاتھ

سرخ رنگت کے ہاتھ کئی وجہ سے ہوتے ہیں جن میں سر فہرست:

* بلڈ پریشر کے مریضوں کے۔

µµ* زیادہ مرچ مصالحہ کھانے والوں کے۔

* اگر ہاتھ ہتھیلی، اُنگلیوں اور ہاتھ کے پچھلی طرف سے بھی چمکدار سرخ ہوں تو ایسا شخص پیلا گرا (pellagra) ایک قسم کی وٹامن کی کمی کا مریض ہوتا ہے جو بہت کم لوگوں میں پائی جاتی ہے۔

* جو لوگ کیمیکل کا کام کرتے ہیں اُن کے ہاتھ بھی سرخ اور کھردرے ہوے ہیں۔

ہتھیلی پر علامات

ہتھیلی موجودہ اور موروثی دونوں طرح کی بیماریوں کے بارے میں آگاہی دیتی ہے اور یہ ہتھیلی پر لائینں جیسے جیسے انسان کی بیماری میں اُتار چڑھاﺅ آتا رہتا ہے۔ ان لائنوں میں ، ان کی گہرائی اور ان کی رنگت میں۔ ان کے زیادہ واضح ہونے یا مٹ جانے میں تبدیلی آتی رہتی ہے۔ اس کی مثال یوں ہے کہ اگر بدپرہیزی جاری رہے۔ کولیسٹرول شریانوں میں جمع ہونا شروع ہو جائے۔ زیادہ کیلریز اور زیادہ چکنائی(Fats ) والی خوراک مسلسل استعمال میں رہے۔ خون کی شریانوں میں رکاوٹ بڑھتی جائے تو دل کی بیماری اور خون کے بہاﺅ میں کمزوری ظاہر کرنے والی علامات بڑھتی جائیں گی اور زیادہ واضح ہوتی جائین گی لیکن اگر بدپرہیزی بند کر کے علاج کیا جائے، ورزش کی جائے اور کوشش کی جائے کہ خوراک ایسی کھائی جائے کہ کولیسٹرول بڑھے نہیں بلکہ کم ہو۔ کولیسٹرول اور خون کی شریانوں میں جیسے جیسے رکاوت کم ہوتی جائے گی۔ علامات جو دل کی بیماری کو ہتھیلی اورناخنوں پر واضح کررہی تھیں کم ہوتی جائیں گی۔ مٹتی جائیں گی۔ اور جب خون کا بہاﺅاور اس کے اجزائے ترکیبی درست ہو جائیں گے۔ ہاتھ اور ناخنوں پر صحت کی علامات واپس ظاہر ہو جائیں گی۔

مزید : تعلیم و صحت