ریڈیو پاکستان، ڈاکٹر جاوید اقبال مرحوم کی یاد میں پروگرام’’گریبان چاک‘‘

ریڈیو پاکستان، ڈاکٹر جاوید اقبال مرحوم کی یاد میں پروگرام’’گریبان چاک‘‘

لاہور(فلم رپورٹر)ریڈیو پاکستان نے شاعر مشرق،حکیم الامت علامہ محمد اقبال کے فرزند جسٹس ڈاکٹر جاوید اقبال کی وفات پر انہیں بھر پور خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے قومی نشریاتی رابطے پر خصوصی دستاویزی پروگرام اپنا گریباں چاک پیش کیا جس میں جسٹس جاوید اقبال کی عملی زندگی کا مکمل احاطہ کیا گا جبکہ پروگرام کے آغاز میں مرحوم کی آواز کو شامل کیا گیا جس سے پروگرام کی صوتی خوبصورتی میں اضافہ ہوا اس پروگرام کی سب سے اہم بات اس میں شامل مختلف طبقہ فکر سے تعلق رکھنے والی مقتدر شخصیات کے تاثرات تھے جنہوں نے جسٹس جاوید اقبال کے انتقال کو قومی سانحہ قرار دیا ان کا کہنا تھا کہ شاعر مشرق،حکیم الامت علامہ محمد اقبال سے انہیں جو نسبت جاوید اقبال کی صورت میں میسر تھی آج وہ ختم ہوگئی ان کا شمار ملک کے ان چند سکالرز میں کیا جاتا ہے جن کی آواز کو دنیا بھر میں مقبولیت حاصل تھی وہ اپنی قابلیت کی بناء پر ایک وکیل سے چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ بنے پھر ملک کی اعلی عدالت کے سینئر جج بھی رہے وہ ادیب،مقرر،مفکراور رہنما کے طور یاد رکھیں جائیں گے انھوں نے متعدد کتابیں تحریر کیں جن میں زندہ رود کے نام سے شاعر مشرق کی بائیو گرافی اوران کی اپنی خود نوشت اپنا گریباں چاک کو عالمگیر شہرت حاصل ہوئی جب تک شاعر مشرق کا نام زندہ رہے گا جسٹس جاوید اقبال کا نام بھی زندہ و جاوید رہے گا ۔خصوصی دستاویزی پروگرام اپنا گریباں چاک میں مجیب الرحمان شامی،ڈاکٹر خواجہ محمد ذکریا،جسٹس ریٹائرڈ آفتاب فرخ،امجد اسلام امجد،اجمل نیازی،رؤف طاہر،جسٹس ریٹائرڈ منطور احمد سیال،کرنل ریٹائرڈ محمد سلیم ملک اور جسٹس جاوید اقبال کے صاحبزادے ولید اقبال کے تاثرات کو شامل کیا گیا ۔

مزید : کلچر