آٹا اور میدے کی قیمتوں میں اضافہ ظالمانہ ہے،ڈاکٹر وسیم اختر

آٹا اور میدے کی قیمتوں میں اضافہ ظالمانہ ہے،ڈاکٹر وسیم اختر

لاہور(جنرل رپورٹر)پارلیمانی لیڈرصوبائی اسمبلی وامیر جماعت اسلامی پنجاب ڈاکٹر سید وسیم اخترنے فلور ملز کی جانب سے اوپن مارکیٹ میں گندم کی قیمتوں کوجوازبناتے ہوئے20کلوآٹے کاتھیلہ 15 اورمیدے کی بوری 84روپے مہنگی کرنے پر اپنی شدیدتشویش کا اظہارکرتے ہوئے اضافے کو ظالمانہ قراردیا ہے۔انہوں نے کہاکہ گزشتہ چند دنوں کے دوران تین بار آٹے کی قیمتوں میں اضافہ ہوچکا ہے ملک میں پہلے ہی عوام مہنگائی کی چکی میں پس رہے ہیں غریب اورعام آدمی دو وقت کی روٹی سے بھی محروم ہوچکاہے۔انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ آٹے کی قیمت میں اضافے کوفی الفور واپس لے اور عوام کوریلیف فراہم کرے فلورملوں کومن چاہی قیمتیں بڑھانے سے روکاجائے۔انہوں نے کہاکہ مہنگائی،بے روزگاری،لوڈشیڈنگ،لاقانونیت،دہشتگردی اور حکمر ا نو ں کی من مانیوں نے18کروڑ عوام کی زندگی اجیرن کررکھی ہے۔گڈگورننس کایہ حال ہے کہ پنجاب میں رواں سال کے پہلے 9ماہ میں8لاکھ90ہزار جرائم ریکارڈ ہو ئے ہر دوگھنٹے کے بعد قتل،ہرگھنٹے بعد اغوا برائے تاوان کی واردات ہورہی ہے۔شہری اب تک آٹھ ارب روپے اور قیمتی اشیاء سے محروم ہوچکے ہیں۔ڈاکٹر سید وسیم اختر نے کہاکہ حکمرانوں نے اپنی انتخابی مہم کے دوران جووعدے کئے تھے ان میں سے ایک بھی پورانہیں ہوسکا۔اشیاء خوردونوش کی قیمتوں میں کمی لانے کے تمام دعوے ریت کی دیوار ثابت ہوئے ہیں۔عوام الناس کوکسی قسم کاکوئی ریلیف میسر نہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت ناجائز منافع خوروں اور ذخیرہ اندوزوں سے سختی سے نمٹے۔انہوں نے مزیدکہاکہ جب تک حکمران اپنے اللے تللے کنٹرول کرنے کے ساتھ ساتھ ٹیکس نیٹ ورک کو درست اور بیرون ملک پڑی دولت پاکستان واپس نہیں لے کرآتے تب تک نہ مہنگائی کاجن قابو میں آسکتا ہے اور نہ ہی ملک ترقی وخوشحالی کی راہ پر گامزن ہوسکتا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4