سانحہ منیٰ کو فرقہ وارانہ رنگ دینا قابل مذمت ہے،ذاکرالرحمن صدیقی

سانحہ منیٰ کو فرقہ وارانہ رنگ دینا قابل مذمت ہے،ذاکرالرحمن صدیقی

لاہور (آن لائن) سانحہ منیٰ کو فرقہ وارانہ رنگ دینا قابل مذمت ہے۔ حجاج کرام کی خدمت کے لیے سعودی حکومت کی خدمات ڈھکی چھپی نہیں۔ شاندار حج انتظامات ہی سعودی حکومت کے انتہائی شاندار اقدامات کی بدولت ممکن ہوئے۔ ایک مخصوص لابی کا خادم حرمین شریفین کو نشانہ بنانا اور اس سارے واقعہ کا ذمہ دار ٹھہرانا قابل افسوس امر ہے۔ سعودی حکومت پر بے جا تنقید قبول نہیں۔ شکست کا بدلہ حج جیسی عبادت کے پردے میں لینا انتہائی گھٹیا حرکت ہے۔ ان خیالات کا اظہار اہلحدیث یوتھ فورس پاکستان کے صدر حافظ ذاکر الرحمن صدیقی اور حافظ سلمان اعظم نے حج کی ادائیگی کے بعد واپسی پر لاہور ایئر پورٹ پر گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ سانحہ منیٰ پر سیاست نہیں کرنی چاہیے

‘ سانحہ کی ہر پہلو سے مکمل تحقیقات ہونا چاہئیں تا کہ اس کے ذمہ داران بے نقاب ہو سکیں۔ انہوں نے کہا کہ حالت احرام‘ طواف اور دوران حج شہید ہونے والے خوش نصیب ہیں۔ یہ موت اللہ تعالیٰ کے انعام یافتہ لوگوں کی نشانی ہے۔ موت پر افسوس ضرور مگر اس پر واویلہ کرنا گناہ ہے۔ اہلحدیث یوتھ فورس پاکستان کے جنرل سیکرٹری حافظ فیصل افضل شیخ نے کہا کہ اہلحدیث یوتھ فورس سینیٹر پروفیسر ساجد میر کے حکم پر NA-122 میں ایاز صادق کی مکمل حمایت کرے گی۔ کارکنان کو ہدایت کی کہ وہ ایاز صادق کو ووٹ ڈال کر ملک کی ترقی کے دشمنوں کو شکست دیں۔عوام شیر کے علاوہ کسی کو ووٹ ڈال کر اپنا قیمتی ووٹ ضائع مت کرے۔ اہل حدیث یوتھ فورس 9 اکتوبر کو ایاز صادق کی حمایت میں ایک بہت بڑا جلسہ کرے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4