جنوبی ایشیاء کو جنگ اور تصادم سے بچانا ہے تو مسئلہ کشمیر کو حل کرنا پڑے گا ٗ یاسین ملک

جنوبی ایشیاء کو جنگ اور تصادم سے بچانا ہے تو مسئلہ کشمیر کو حل کرنا پڑے گا ٗ ...

سری نگر ( اے این این )لبریشن فرنٹ چیئرمین محمد یاسین ملک نے کہا ہے کہ جنوبی ایشیاکو تصادم اور جنگ سے بچانا ہے تو مسئلہ کشمیر کو حل کرنا ہی پڑے گا ٗمستقل اور پائدار امن و استحکام کے قیام کیلئے پاکستانی وزیر اعظم محمد نواز شریف کی جانب سے اقوام متحدہ کے اجلاس میں پیش کی گئیں تجاویزمثبت اور معقول ہیں۔ پاکستانی وزیر اعظم محمد نواز شریف کے اس بیان جس میں انہوں نے تصادم اور تباہی سے بچنے کیلئے مسئلہ کشمیر کے حل کا تلاش کرنے، کشمیریوں کی بنیادی فریق کی حیثیت قبول کرنے، کشمیر سے افواج کا انخلاکرنے وغیرہ کی باتیں کی ہیں کو مثبت اور معقول قرار دیتے ہوئے یاسین ملک نے کہا کہ مسئلہ کشمیر ایک انسانی مسئلہ ہے جس نے کشمیریوں کی تین نسلوں کو اپنی زد میں لانے کے ساتھ ساتھ بھارت اور پاکستان کے عوام کو بھی ایک مستقل اور لگاتار انتشار،افتراق اور تصادم کی کیفیت میں مبتلا کررکھا ہے۔ انہوں نے کہا کہ برصغیر ہند و پاک میں اگر حقیقی امن و استحکام اور تعمیر و ترقی کو ممکن بنانا ہے تو بھارت اور پاکستان پر لازم ہے کہ وہ مسئلہ کشمیر کو کشمیریوں کی امنگوں، آرزوؤں، قربانیوں اور تمناں کے مطابق اور مزاکراتی عمل میں کشمیریوں کو عملی طور پر شریک کرنے کی سعی کریں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر دنیا کی وہ سرزمین ہے جہاں سب سے زیادہ فوجی تعینات ہیں اور مسلسل تصادم کی کیفیت طاری ہے۔ اسلئے اس خطے سے فوجی انخلاسے بہتر کوئی بات نہیں ہوسکتی۔ یاسین ملک نے کہا کشمیری مسئلہ کے بنیادی اور اہم فریق ہیں اور انہیں نظر انداز یا پھر پشت بہ دیوار کرکے اس مسئلے کا کوئی حل نکالنا ممکن نہیں ہے۔ انہوں نے یقین ظاہر کیا کہ پاکستانی وزیر اعظم کی قیام امن کیلئے دی جانے والی تجاویز کا دوسری جانب سے بھی مثبت جواب دیا جائے گا اور یہ دونوں ممالک حقیقی امن و استحکام اور تعمیر و ترقی کے نئے باب رقم کرنے کیلئے مسئلہ جموں کشمیر کے حتمی حل کی جانب مثبت پیش قدمی کریں گے۔ یاسین ملک نے فرنٹ کے بلال احمد بیگ المعروف ببلو کو انکی شہادت کی برسی پر یاد کرتے ہوئے شاندار الفاظ میں خراج عقیدت ادا کیا ہے۔

مزید : عالمی منظر