گوئٹے مالا: لینڈ سلائیڈنگ سے ہلاکتوں کی تعداد90ہو گئی‘350لا پتہ

گوئٹے مالا: لینڈ سلائیڈنگ سے ہلاکتوں کی تعداد90ہو گئی‘350لا پتہ

واشنگٹن(اے این این )لاطینی امریکی ملک گوئٹے مالا میں حکام نے کہا ہے کہ ایل یمبرے گاؤں کے مکانوں پر مٹی کے تودے اور چٹانیں گرنے سے مرنے والوں کی تعداد 90ہو گئی جبکہ 350لاپتہ اور درجنوں زخمی ہیں۔امریکی میڈیا کے مطابق جمعرات کی شب لگاتار تیز بارش کے نتیجے میں وادی میں موجود گھروں پر کئی ٹن مٹی کے تودے اور چٹانیں گر گئی تھیں۔امدادی ٹیمیں جاسوس کتوں کی مدد سے ملبے کے نیچے پھنسے زندہ افراد کو تلاش کر رہی ہیں۔ہزاروں امدادی کارکن بھی سرگرمیوں میں مصروف ہیں۔حکام کے مطابق ابھی بھی ساڑھے تین سو افراد لاپتہ ہیں جبکہ 90لاشیں نکالی جا چکی ہیں۔ایک سرکاری ترجمان جولیا بریرا نے بتایا کہ امدادی ٹیموں نے اب تک 26 افراد کو بچا لیا ہے۔جائے حادثہ پر ہزاروں کی تعداد میں امدادی کارکن موجود ہیں اور تدفین کا کام شروع ہو چکا ہے،درجنوں زخمی مختلف ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔گوئٹیمالا کی ہنگامی سروسز کونریڈ کے ترجمان جولیو سانچیز نے کہا ہے کہ امریکہ اور میکسیکو نے امداد کی پیشکش کی ہے لیکن انھیں ضرورت پڑنے پر استعمال کے لیے روک کر رکھا گیا ہے۔ایک امدادی کارکن نے خبر رساں ادارے روئٹرز کو بتایا کہ ابتدائی 72 گھنٹوں کے بعد زندہ بچنے والوں کی امید کم ہے اور مٹی کے تودے تلے دبے لوگوں کے بچنے کے امکان زلزلے کی زد میں آنے والوں سے کم ہوتے ہیں۔حکام کے مطابق امدادی کاموں میں مزید تیز بارش کے امکانات اور اس خطے کا غیر ہموار ہونا رکاوٹ ڈال رہے ہیں۔خیال رہے کہ ایل یمبرے ڈھال والی پہاڑیوں سے گھرا ہوا ہے اور وہاں کے زیادہ تر گھر وادی کے نچلے حصے میں ہیں۔مقامی حکام نے تیز بارش کے نتیجے میں غیر مستحکم پہاڑیوں کے گرنے کے بارے میں پہلے سے متنبہ کر رکھا تھا۔گوئٹیمالا ان ممالک میں شامل ہے جہاں قدرتی آفات سے متاثر ہونے کے امکانات زیادہ ہیں۔

مزید : عالمی منظر