اسرائیل کی ریاستی دہشت گردی جاری ٗ گزشتہ ماہ 4فلسطینی شہید‘37گرفتار

اسرائیل کی ریاستی دہشت گردی جاری ٗ گزشتہ ماہ 4فلسطینی شہید‘37گرفتار

غزہ (اے این این)اسلامی تحریک مزاحمت "حماس" نے ستمبر میں فلسطین میں اسرائیلی ریاستی دہشت گردی کی تفصیلات جاری کی ہیں۔ رپورٹ میں بتایا گیاہے کہ قابض صہیونی فوجیوں نے ستمبر کے دوران ریاستی دہشت گردی کے نتیجے میں چار فلسطینی شہریوں کو شہید اور 371 کو گرفتار کرکے جیلوں میں ڈالا۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ستمبر کے دوران اسرائیلی فوج کی فلسطینی شہریوں کے خلاف ریاستی دہشت گردی عروج پر رہیں۔ پچھلے مہینے میں مجموعی طورپر چار فلسطینیوں کو شہید اور پونے چار سو کے قریب شہریوں کو گرفتار کیاگیا۔گرفتار کیے گئے 371 شہریوں میں 41 افراد کی عمریں 18 سال سے کم تھیں۔ عالمی قوانین کے تحت اٹھارہ سال سے کم عمر افراد کو بچوں میں شمار کیا جاتا ہے اور ان کی گرفتاریاں اور جیلوں میں ڈالناقانونا جرم ہے۔ گرفتار کے گئے شہریوں میں 67 سابق اسیر بھی شامل ہیں۔ ان میں سے بعض سابق اسیران کو فلسطینی اتھارٹی کی پولیس نے حراست میں لیا۔رپورٹ میں بتایا گیاہے کہ ستمبر کے دوران قابض صہیونی فوجیوں نے بیت المقدس میں فلسطینی شہریوں کے متعدد مکانات کو مسمار کیا اور کئی مکانوں پرقبضہ کرلیا گیا گیا۔ستمبر میں صہیونی حکومت نے بیت المقدس میں 396 غیرقانونی مکانات کی تعمیر کی منظوری دی۔پچھلے ماہ مغربی کنارے سے عباس ملیشیا نے سیاسی بنیادوں پر 49 شہریوں کو گرفتار کیا۔ ان میں سے بیشتر کا تعلق حماس سے تھا۔ اس کے علاوہ عباس ملیشیا نے 33 شہریوں کو سیکیورٹی مراکز میں طلب کرکے ان سے پوچھ گچھ کی۔عباس ملیشیا نے حراست میں لیے گئے 14 سیاسی کارکنوں کی مدت حراست میں توسیع کی جبکہ مغربی کنارے میں دراندازی کرنے والے چار یہودی شرپسندوں کو بہ حفاظت واپس کیا گیا۔

مزید : عالمی منظر