نجی اسکولوں کی فیسوں میں اضافے کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

نجی اسکولوں کی فیسوں میں اضافے کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

کراچی (اسٹاف رپورٹر ) نجی اسکولوں کی جانب سے فیسوں میں اضافے کے خلاف اتوار کو کراچی کے علاقے سی ویو پر والدین اور طلباء کی جانب سے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرے میں مختلف اسکولوں کے والدین اور بچوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔ مظاہرے میں شرکاء نے ہاتھ میں بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر مختلف نعرے درج تھے۔ شرکاء تعلیمی دہشت گردی اور فیسوں میں اضافے کے خلاف نامنظور کے نعرے لگا رہے تھے۔ اس موقع پر سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے۔ شرکاء نے 2005 کے قانون کو نافذ کرنے کا مطالبہ کیا۔تفصیلات کے مطابق ملک بھر کی طرح کراچی میں بھی والدین نجی اسکولوں کی من مانی سے پریشان ہیں ۔ نجی اسکولوں نے یکدم فیسوں میں کئی گناہ اضافہ کردیا ہے جس پر والدین اور طلبا سراپا احتجاج ہیں۔ اس ضمن میں اتوار کو سی وی یو پر مختلف اسکولوں کے طلباء کے والدین کی جانب سے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ ریلی کے شرکاء نے مطالبہ کیا کہ حکومت کی جانب سے اسکولوں کو 10 فیصد فیسوں میں اضافے کو خلاف قانون قرار دیا جائے۔ حکومت نجی اسکولوں کو چھوٹ دینے کے بجائے 2005 کے قانون پر عمل درآمد کو یقینی بنائے اور فیسوں میں کیا گیا اضافہ فوری واپس لیا جائے۔ احتجاجی ریلی کی قیادت سلمان احمد کررہے تھے۔ احتجاجی مظاہرے کے موقع پر پولیس کی بھاری نفری بھی موجود تھی۔ واضح رہے کہ وزیر تعلیم سندھ نثار احمد کھوڑو کی جانب سے فیسوں میں اضافے کا سختی سے نوٹس لیا گیا ہے اور یہ بھی کہا گیا ہے کہ جن اسکولوں نے فیسوں میں اضافے کا فیصلہ کیا ان کی رجسٹریشن منسوخ کردی جائے گی۔

مزید : کراچی صفحہ آخر