بلدیاتی انتخابات خورشید شاہ کے بیٹے کھوڑو کی بیٹی سمیت 69 امیدوار بلامقابلہ منتخب

بلدیاتی انتخابات خورشید شاہ کے بیٹے کھوڑو کی بیٹی سمیت 69 امیدوار بلامقابلہ ...
بلدیاتی انتخابات خورشید شاہ کے بیٹے کھوڑو کی بیٹی سمیت 69 امیدوار بلامقابلہ منتخب

  

لاڑکانہ( ویب ڈیسک ) بلدیاتی انتخابات میں سکھر اور لاڑکا نہ سے منتخب نمائندے اپنے بیٹوں اور بیٹی کو بلا مقابلہ کامیاب کرانے میں کامیاب ہو گئے ہیں۔ رکن قومی وصوبائی اسمبلی اور سینیٹر کے بچوں کے مقابلے میں کسی بھی پارٹی کا امیدوار سامنے نہ آسکا۔ الیکشن کمیشن نے سکھر سے بلا مقابلہ منتخب ہونے والے 40 اور لاڑکانہ سے کامیاب 29 امیدواروں کی حتمی فہرست جاری کر دی ہے۔ صوبائی وزیر بلدیات سید ناصر حسین شاہ کے صاجزادے سمیت 1582 امید وارسکھر میں جبکہ لاڑکانہ ضلع کی 428 نشستوںپر 1446 امیدواروں کے درمیان 31 اکتوبر کو مقابلہ ہوگا۔ تفصیلات کے مطابق قائد حزب اختلاف سید خورشید احمد شاہ کی جانب سے گزشتہ روز آنے والے بیان کے بلدیاتی انتخابات صوبے کی حکمران جماعت کے ہوتے ہیں، اسے سچ کر دکھایا، سید خورشید احمد شاہ کے صاجزادے سید فرخ شاہ اور پیپلز پارٹی سے تعلق رکھنے والے سینیٹر اسلام الدین شیخ کے صاجزادے ارسلان اسلام شیخ سکھر جبکہ نثار کھوڑو کی صاجزادی لاڑکانہ سے بلا مقابلہ کامیابی حاصل کرسکے ہیں۔ الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کردہ فہرست کے مطابق قائد حزب اختلاف سید خورشید احمد شاہ اور سینیٹر اسلام الدین شیخ کے صاجزادوں سمیت 40 امیدواروں سکھر سے بلا مقابلہ منتخب ہوئے ہیں۔ جاری فہرست مین جن امیدواروں کو بلا مقابلہ کا میاب دکھایا گیا ہے ان میں پاکستان پیپلز پارتی کی جانب سے دئے جانے والے ٹکٹ پر کھڑے ہونے والے چیئر مین، نائب چیئر مین، جنرل کونسلر، ضلع کونسلر کے امیدوار شامل ہیں۔ سکھر ضلع میں31 اکتوبر کو ہونے والے بلدیاتی انتخابات کے سلسلے میں انتخابات نامزدگی جمع کرانے کی آخری تاریخ تک 23 سو سے زائد امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے جن میں 2 ہزار30 کاغذات نامزدگی درست قرار دئے گئے جبکہ 270 کاغذات نامزدگی نا مکمل ہونے پر مسترد کئے گئے جبکہ 520 امیدواروںنے اپنے کاغذات نامزدگی واپس لئے، بلا مقابلہ کامیاب ہونے والوں میں یونین کونسلوں کے چیئر مین، وائس چیئر مین، جنرل کونسلر اور ضلع کونسلر کی رکنیت کے امیدوار شامل ہیں۔ دریں اثنا لاڑکانہ میں بلامقابلہ فاتح قرار دئے جانے والے امیدواروں میں تین یونین کونسل کے چیئرمین اور وائس چیئرمین ہیں، جن میں یونین کونسل وکیا سانگی کے چیئر مین اللہ ڈنو سانگی اور وائس چیئر مین محمد رمضان جتوئی، یونین کونسل وڈا مہر کے چیئر مین عبدالرحمن اور وائس چیئر مین عنایت اللہ، ڈوکری تحصیل کے گاجی دیر و یونین کونسل کے چیئرمین ریاض حسین اور وائس چیئر مین خادم حسین شامل ہیں جبکہ پانچ ضلع کونسل کے ممبر بلا مقابلہ کامیاب ہوئے ہیں جن میں یونین کونسل عاقل سے صوبائی وزیر نثار احمد کھوڑو کی بیٹی ندا کھوڑو، یونین کونسل فرید آباد سے صوبائی وزیر داخلہ سہیل انور سیال کے بھائی ظفر انور عرف طارق سیال، یونین کونسل کارانی سے سابق ایم این اے حزب اللہ بگھیو کے بیٹے اور موجودہ ایم این اے نذیر احمد بگھیو کے بھتیجے زوہیب احمد بگھیو، یونین کونسل وکیا سانگی سے سلیم خان جتوئی سمیت دیگر شامل ہیں۔ اسی طرح میونسپل کمیٹیوں کے وارڈ کے تین جنرل کونسلر اور دیہات کی یونین کونسلز کے 18 جنرل کونسلر بلا مقابلہ کامیاب ہوئے ہیں۔ کامیاب قرار دئے گئے 29 امیدواروں میں سے صرف دو جنرل کونسلرز کا تعلق پیپلز پارٹی ورکرز جبکہ دیگر کا تعلق پیپلز پارٹی سے ہے۔ بلا مقابلہ فاتح قرار دئیے گئے امیدواروں کے حمایتیوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے اور انکے اعزاز میں مختلف تقاریب کا بندوبست کیا جا رہا ہے۔

مزید : لاڑکانہ