ہائی کورٹ :کرپشن سکینڈلز کے گواہوں کو تحفظ نہ فراہم کرنے پر چیئرمین کی جواب طلبی

ہائی کورٹ :کرپشن سکینڈلز کے گواہوں کو تحفظ نہ فراہم کرنے پر چیئرمین کی جواب ...
ہائی کورٹ :کرپشن سکینڈلز کے گواہوں کو تحفظ نہ فراہم کرنے پر چیئرمین کی جواب طلبی

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے ڈی ایچ اے سمیت دیگر سکینڈل کے ریفرنس دائر کرنے والے متروکہ وقف املاک کے ڈپٹی سیکرٹری کوبااثر ملزموں کی طرف سے دھمکیاں ملنے کے بعد تحفظ فراہم نہ کرنے پر چیئرمین نیب سے جواب طلب کر لیا۔

نیب کی طرف سے کرپشن سکینڈلز کے گواہوں کے عدم تحفظ کا انکشاف اس وقت ہوا جب لاہور ہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس محمود مقبول باجوہ کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے متروکہ وقف املاک کے ڈپٹی سیکرٹری پراپرٹیز منیر احمد کی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزار کے وکیل سیف الملوک نے بنچ کو بتایا کہ وفاقی حکومت کے کہنے پر درخواست گزارنے ڈی ایچ اے اور متروکہ وقف املاک کی اراضی کے اربوں روپے کے سکینڈلزمیں ریفرنسز دائر کئے جس پر آصف رضا شیخ سمیت دیگر بااثرملزم درخواست گزار اور مرکزی گواہ کو قتل کرنے اور اسکے خاندان کو جان سے مارنے کے دھمکیاں دینے پراترآئے۔ 

درخواست گزار نے چیئرمین نیب کو تحفظ فراہم کرنے کی خفیہ خط لکھا جو ملزموں کے ہاتھ لگ گیا، ملزموںنے ملی بھگت کر کے درخواست گزار کو معطل کروایا اور وزارت مذہبی امور سے درخواست گزارکیخلاف ہی خفیہ خط لکھنے کی انکوائری شروع کروا دی ، انہوں نے استدعا کی کہ درخواست گزار کو تحفظ فراہم کرتے ہوئے اس کے خلاف شروع کی گئی انکوائری روکی جائے جبکہ نیب کو درخواست گزار کی طرف سے دائر تمام کرپشن سیکنڈلز اور ریفرنسز میں انکوائری مکمل کرنے کا حکم دیا جائے، عدالت نے درخواست کو قابل سماعت قرار دیتے ہوئے چیئرمین نیب سے ڈی ایچ اے اور ملتان ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے کرپشن سکینڈلز میںانکوائری کی پیشرفت رپورٹ تین نومبرتک طلب کرلی، عدالت نے درخواست گزارکو تحفظ فراہم نہ کرنے کے حوالے سے بھی چیئرمین نیب کو جواب داخل کرانے کی ہدایت کی ہے ۔

مزید : لاہور