تیل کے کنویں ہاتھ سے نکلنے کے بعد داعش نے ایک ایسی چیز یورپ میں سمگل کرنی شروع کردی کہ جان کر آپ کی بھی ہنسی چھوٹ جائے گی

تیل کے کنویں ہاتھ سے نکلنے کے بعد داعش نے ایک ایسی چیز یورپ میں سمگل کرنی شروع ...
تیل کے کنویں ہاتھ سے نکلنے کے بعد داعش نے ایک ایسی چیز یورپ میں سمگل کرنی شروع کردی کہ جان کر آپ کی بھی ہنسی چھوٹ جائے گی

  

دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک) شام و عراق میں حکومتی افواج اور کرد جنگجوﺅں کی پیش قدمی کے باعث تیل کے کنویں شدت پسند تنظیم داعش کے ہاتھ سے نکلتے جا رہے ہیں۔ داعش کی آمدنی کا زیادہ تر انحصار انہی کنوﺅں سے حاصل ہونے والے تیل پر تھا جسے وہ سمگل کرکے پیسہ کماتے تھے، اور تیل ہاتھ سے نکلنے پر داعش کمائی کے حیران کن ذرائع ڈھونڈنے پر مجبور ہو گئی ہے۔

مسلم پریس کی رپورٹ کے مطابق پیرس سکول آف بزنس کے پروفیسر اور عالمی امور کے ماہر فریڈرک انسیل نے انکشاف کیا ہے کہ ” اب داعش نے سگریٹ سمگل کرنا شروع کر دیئے ہیں اور حیران کن طور پر یہ سگریٹ شام و عراق سے فرانس میں سمگل کیے جا رہے ہیں۔“

ایک ہی دن میں یورپ میں داخل ہونے والے غیرقانونی تارکین وطن کی اتنی بڑی تعداد کہ جان کر آپ کے بھی ہوش اڑ جائیں گے، نیا ریکارڈ بن گیا

فریڈرک کا کہنا تھا کہ ”فرانس میں گزشتہ سال نومبر میں ہونے والی دہشت گردی کی وارداتوں کے بعد امریکہ اور روس نے داعش کے خلاف فضائی حملوں میں اضافہ کر دیا تھا اور بالخصوص ان راستوں کو نشانہ بنایا تھا جن کے ذریعے داعش تیل ترکی لیجاتی تھی اور پھر وہاں سے باقی دنیا میں سمگل کیا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ کرد جنگجوﺅں نے بھی تیل کے کئی کنویں داعش کے قبضے سے چھڑوا لیے ہیں جس سے اس کی آمدنی میں خاطرخواہ کمی واقع ہوئی ہے جسے پورا کرنے کے لیے اس نے اب عراق اور شام میں بننے والی دیگر اشیاءسمگل کرنی شروع کر دی ہیں۔ ان میں سگریٹ سرفہرست ہیں۔ اس کے علاوہ، غذائی اشیائ، کپاس اور منشیات وغیرہ شامل ہیں۔ یہ اشیاءفرانس میں سمگل کرکے داعش کروڑوں ڈالرز کما رہی ہے۔ فرانسیسی حکومت کو یہ سمگلنگ روکنے کے لیے اپنے بارڈرز کی نگرانی مزید سخت کرنی ہو گی۔“

مزید :

بین الاقوامی -