اپوزیشن لیڈر چیئرمین پی اے سی بنے تو روز کسی محکمے کا ریکارڈ جلے گا،خر م گنڈا پور

اپوزیشن لیڈر چیئرمین پی اے سی بنے تو روز کسی محکمے کا ریکارڈ جلے گا،خر م گنڈا ...

  

لاہور( ایجوکیشن رپورٹر)پاکستان عوامی تحریک کے سیکرٹری جنرل خرم نواز گنڈاپور نے کہا ہے کہ اپوزیشن لیڈر چیئرمین پی اے سی بنے تو ہر روز کسی محکمے کا ریکارڈ جلے گا اور کسی دفتر کو آگ لگے گی،شہباز شریف 14 بے گناہوں کے نامزد قاتل ،56 کمپنیوں کی کرپشن میں ملوث اور نیب کو مطلوب ہیں ،ن لیگ کو چیئرمین شپ ملی تو وہ تذلیل کیلئے سب سے پہلے چیئرمین نیب کو طلب کریں گے ، امید ہے نئے پاکستان میں کرپشن زدہ مک مکا کی پرانی سیاسی روایات کو کوئی جگہ نہیں ملے گی، اپوزیشن لیڈر کے بلحاظ عہدہ چیئرمین بننے کی روایت ختم ہونی چاہیے۔وہ گزشتہ روز مرکزی سیکرٹریٹ میں اخبار نویسوں سے گفتگو کررہے تھے۔

چیئرمین پبلک اکاؤنٹس کمیٹی ایک ایسے پارلیمنٹرین کو ہونا چاہیے جو کم از کم بظاہر تو دیانت دار لگے اور وہ خود کرپشن کے کسی کیس میں کسی ادارے کو مطلوب نہ ہو، انہوں نے کہا کہ چیئرمین پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے گزشتہ پانچ سال یا دس سال کے آڈٹ پیرے دیکھنے اور بے ضابطگیوں پر فیصلے سنانے ہیں، پنجاب میں 10سال وہ خود وزیراعلیٰ رہے اور انہوں نے 10 ہزار ارب کے لگ بھگ رقوم استعمال کیں اور وفاق میں ان کے بھائی وزیراعظم اور ان کی جماعت برسراقتدار تھی، وہ اپنے ہی گھر کی بے ضابطگیوں اور بدعنوانیوں کی غیر جانبدار تحقیقات کیسے کر سکتے ہیں؟ ہماری اطلاع کے مطابق سب سے بڑی کرپشن محکمہ خزانہ نے کی اور وزیر خزانہ اسحاق ڈار تھے جو آج کل بھاگے ہوئے ہیں، کیا شہباز شریف اسحاق ڈار کا محاسبہ کر سکیں گے یا محکموں کو کرنے دیں گے؟انہوں نے کہا کہ آج پاکستان اگر 28 ہزار ارب کا مقروض ہے تو اس کی بنیادی وجہ یہی لوگ ہیں جو اس وقت چیئرمین پبلک اکاؤنٹس کمیٹی بننے کے لیے ہاتھ پاؤں مارہے ہیںَ

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -