اندھیر نگری چوپٹ راج ، پولیس کے سینئر افسران جونیئرز کے ماتحت ہو گئے

اندھیر نگری چوپٹ راج ، پولیس کے سینئر افسران جونیئرز کے ماتحت ہو گئے

  

کراچی(رپورٹ /ندیم آرائیں )سندھ پولیس میں ترقیوں کے طریقہ کار پر عملدرآمد نہ ہونے کے باعث سینئر افسران اپنے ہی جونیئرز کے ماتحت بن گئے ۔کئی سالوں سے انسپکٹرز کے عہدے پر تعینات افسران کو تاحال ڈی ایس پی کے عہدے پر ترقی نہیں دی گئی ہے جس کی وجہ سے ان افسران کے سامنے ہیڈ کانسٹیبلز اور اے ایس آئی رہنے والے اہلکار وں نے اب ان ہی سے چارج لینا شروع کردیا ہے جس کی وجہ سے سینئر افسران میں بے چینی پائی جاتی ہے ۔تفصیلات کے مطابق محکمہ پولیس میں افسران و اہلکاروں کی ترقی کے حوالے سے ایک سسٹم رائج ہے ۔مختلف امتحانوں ،تربیت اور کورسز کو پاس کرنے والے اہلکاروں اور افسران کو ان کی سنیارٹی کے مطابق اگلے عہدے پر ترقی دینا لازمی ہے تاہم سندھ پولیس میں ترقیوں کا عمل انتہائی پیچیدہ ہوگیا ہے اور افسران کی ترقیوں کو پسند اور نا پسند کی بھینٹ چڑھادیاگیا ہے ۔اس وقت صرف کراچی میں کئی ایسے افسران موجود ہیں جن کو انسپکٹر بنے ہوئے 15سے 20سال گذر گئے ہیں لیکن ان کو ڈی ایس پی کے عہدے پر ترقی نہیں دی جارہی ہے ۔اثر ورسوخ رکھنے والے پولیس اہلکار جنہوں نے بطور ہیڈکانسٹیبل یا اے ایس آئی کے اپنی سروس کا آغاز کیا تھا اپنے تعلقات کا استعمال کرتے ہوئے تیزی سے ترقی کی منازل طے کررہے ہیں اور اب نوبت یہاں تک آپہنچی ہے کہ جن افسران کے سامنے یہ اہلکار بطور ہیڈکانسٹیبل ڈیوٹی دیتے تھے اب وہ ان ہی افسران سے عہدوں کا چارج لے رہے ہیں ۔کراچی میں تعینات چند ایس ایچ او ز نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ یہ صور ت حال ان کے لیے بے چینی کا باعث بن رہی ہے کیونکہ اس طرح اپنے جونیئرز کو چارج دینا ان کے لیے اچھا تجربہ نہیں ہے ۔اگر محکمے میں ترقیوں کا عمل ایک طے کردہ نظام کے تحت چلتا رہے ،پسند اور ناپسند کو آڑے نہ آنے دیا جائے تو پھر کسی افسر کی حق تلفی نہیں ہوگی ۔انہوں نے بتایا کہ سنیارٹی کی بنیاد پر اب انہیں ڈی ایس پی بنے ہوئے بھی کافی عرصہ گذر جانا چاہیے تھا لیکن اب ایسا لگتا ہے کہ ان کی سروس اسی عہدے پر ختم ہوجائے گی ۔دوسری جانب سے ذرائع کا کہنا ہے کہ محکمہ پولیس میں تبادلوں اور ترقیوں کا عمل مکمل طور پر سیاسی ہوچکا تھا تاہم سابق آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ نے معاملات کو بہتر بنانے میں کافی کردار ادا کیا ہے ۔ان کے دور میں کئی عرصے سے ترقی کے منتظر اے ایس آئیز اور سب انسپکٹرز کو میرٹ کی بنیاد پر اگلے عہدوں پر ترقی دی گئی ۔اسی طرح کچھ انسپکٹرز بھی ڈی ایس پی بننے میں کامیاب ہوئے تاہم ایک مرتبہ پھر یہ عمل سست روی کا شکار ہوگیا ہے ۔محکمہ پولیس میں سیاسی مداخلت بھی افسران کی ترقیوں میں رکاوٹ ہے ۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -ملتان صفحہ آخر -