نیو ٹک کی کارکردگی پر سینیٹ قائمہ کمیٹی کا اظہار تشویش ، تحقیق کیلئے ذیلی کمیٹی قائم

نیو ٹک کی کارکردگی پر سینیٹ قائمہ کمیٹی کا اظہار تشویش ، تحقیق کیلئے ذیلی ...

  

اسلام آباد(آ ئی این پی)سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے وفاقی تعلیم نے نیوٹیک کی کارکردگی پر اظہار تشویش کرتے ہوئے تحقیقات کیلئے سب کمیٹی تشکیل دے دی، وزارت تعلیم نے کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ ہر سال 25لاکھ افراد جاب مارکیٹ میں نئے آرہے ہیں جس کو ہنر سکھانے کیلئے اقدامات کرنے ہوں گے،دبئی ایکسپو2020اور فیفا ورلڈکپ 2022 کیلئے لاکھوں ہنر مند افراد کی ضرورت ہوگی،نیوٹیک میں وزیر اعظم یوتھ پروگرام کے تحت1لاکھ افراد کو ٹریننگ فراہم کر رہے ہیں، ہر تین سال بعدسکول اور اعلیٰ تعلیم کے نصاب پر نظر ثانی کی جاتی ہے، کمیٹی ارکان نے کہا کہ نیوٹیک کی ساری کارکردگی صرف ہوٹلز میں فنکشن کرانے تک محدود ہے،92 فیصد بچے میٹرک پہنچنے سے پہلے سکول چھوڑ دیتے ہیں ان کو ٹارگٹ کرکے ہنر سکھانا ہوگا، اعلیٰ تعلیم کو دانستہ طور پرملک میں تباہ کیا جا رہا ہے،سابق آئی جی کو سربراہ مقرر کیا گیا ہے جن کا اس شعبے سے کوئی تعلق ہی نہیں، کمیٹی نے انجینئرز کیلئے پروفیشنل سروس سٹرکچر بنانے کی سفارش کر دی۔سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے وفاقی تعلیم کااجلاس چیئرپرسن راحیلہ مگسی کی زیر صدارت ہوا۔ اجلاس میں سینیٹر نعمان وزیر، سینیٹر رخسانہ زبیری، سینیٹر جہانزیب جمالدینی، پارلیمانی سیکرٹری وفاقی تعلیم وجیحہ اکرم، جوائنٹ سیکرٹری وفاقی تعلیم، ہائر ایجوکیشن کمیشن اور وزارت تعلیم کے دیگر افسران نے شرکت کی۔ نمل کے پی ایچ ڈی طالبعلم کو ڈگری نہ دینے کے معاملے پر کمیٹی کو بتایا گیا کہ ہر یونیورسٹی کا بورڈ آف ایڈوانسڈ سٹڈیز پی ایچ ڈی طلبا کو ڈگری جاری کرنے کی سفارش کرتا ہے۔2010میں طالب علم کو مقالہ مکمل کرنے کیلئے اضافی14ماہ دیے گئے لیکن وہ اپنی کام مکمل کرنے میں ناکان رہے۔ اس لیے بورڈ کے اجلاس میں طالب علم کو ڈگری جاری نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔کمیٹی ارکان نے کہا کہ پاکستان میں اعلیٰ تعلیم کا پہلے ہی برا حال ہے اس پر ادارے طالبعلموں کو کسی صورت ریلیف دینے کیلئے تیار نہیں ہیں۔ چھوٹے سے مسئلے پر ایک سکالر کے8سال ضائع کردیے گئے۔پاکستان کے اندر اعلیٰ تعلیم کو دانستہ طور پر تباہ کیا جا رہا ہے۔وزارت تعلیم کو معاملہ سلجھانے کا کہا تھا لیکن وہ بھی اس میں ناکام رہے۔ یہ ایک کیس ہے جبکہ اس جیسے درجنوں کیس موجود ہیں۔وزارت تعلیم کی جانب سے معاملہ حل کرنے میں ناکامی پر کمیٹی نے وزارت تعلیم سے تفصیلی رپورٹ طلب کر لی۔

نیوٹیک کاکردگی

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -ملتان صفحہ آخر -