جنگی جنون میں مبتلا مودی سرکار نے روس سے جدید ترین ایئر ڈیفنس سسٹم ایس 400 کی خریداری کے معاہدے پر دستخط کردیئے 

جنگی جنون میں مبتلا مودی سرکار نے روس سے جدید ترین ایئر ڈیفنس سسٹم ایس 400 کی ...
جنگی جنون میں مبتلا مودی سرکار نے روس سے جدید ترین ایئر ڈیفنس سسٹم ایس 400 کی خریداری کے معاہدے پر دستخط کردیئے 

  

نئی دہلی(ڈیلی پاکستان آن لائن)جنگی جنون میں مبتلا ہندوستان کی مودی سرکار نے امریکہ کی طرف سے پابندیوں کی پرواہ کئے بغیرآج روس سے تقریباً چارسو کلومیٹر تک فضا سے فضا میں مار کرنے والے جدید ترین ایئر ڈیفنس سسٹم ایس 400 کی خریداری سمیت 8  دیگر معاہدوں پر دستخط کردیئے ہیں،روسی صدر اور بھارتی وزیر اعظم نے ملاقات میں دہشت گردی سے مقابلہ ، ماحولیاتی تبدیلی اور ہند بحرالکاہل خطہ میں باہمی تعلقات  کو فروغ دینے کے عزم کا اظہار بھی کیا ہے۔

بھارتی نجی ٹی وی کے مطابق ہندوستان کے دورے پر آئے روس کے صدر ولادیمیر پوٹن اور وزیر اعظم نریندر مودی نے دونوں ملکوں کے درمیان اپنے خصوصی اور سٹریٹیجک تعلقات کو نئی جہت دیتے ہوئے آج باہمی تعاون کے آٹھ معاہدوں کے علاوہ دفاعی شعبے میں نہایت اہم ائیر ڈیفنس سسٹم ایس 400میزائل کی خریداری کے معاہدے پر دستخط کر دیئے ہیں۔ ہندوستان روس سے  5.43 ارب ڈالر یعنی تقریباً 40 ہزارکروڑ روپئے میں فضا سے فضا میں مارکرنے والے ان غیرمعمولی میزائیلوں کے پانچ سکوارڈن خریدے گا،بھارت کو  میزائیلوں کی سپلائی دستخط ہونے کے دوسال کے اندریعنی 2020 تک شروع ہوجائے گی، بھارت نے روس سے جدید میزائیل سسٹم   کی خریداری کا معاہدہ امریکہ کی اُس وارننگ کے باوجود کیا ہے جس میں ٹرمپ انتظامیہ نے  روس سے ہتھیار خریدنے پر انڈیا کو اقتصادی پابندی کے شکنجے میں کسنے کی دھمکی دی ہے۔دوسری طرف  ہندوستان نے وزیر دفاع اوروزیر خارجہ کی سطح پر امریکہ کو  پہلے ہی واضح کردیا تھا کہ وہ روس سے ایس 400 میزائل کی  خریداری سے پیچھے نہیں ہٹے گا، روس کے ساتھ اس کے دہائیوں پرانے دفاعی تعلقات ہیں اور اس سے طویل عرصے سے دفاعی ساز وسامان خرید رہا ہے اور ایس 400 میزائیل  خریداری پر بھی طویل عرصے سے بات چیت چل رہی تھی۔واضح رہے کہ اس سے قبل امریکہ  نے مودی سرکار کو تنبیہ کرتے ہوئے  کہا تھا کہ وہ ہندوستان پر کاٹسا یعنی کاؤنٹرنگ امریکہ ایڈورسریز تھرو سینکشن ایکٹ کے تحت اقتصادی پابندی عائد کرسکتا ہے،اس قانون کے مطابق  اگر کوئی بھی ملک روس، ایران یا شمالی کوریا سے ہتھیاروں کی خریداری کرتا ہے تو اسے امریکی پابندیوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔دونوں ملکوں کے درمیان جن آٹھ معاہدوں پر دستخط کئے گئے ان میں صلاح و مشورہ کے پروٹوکول کو وسعت دینے، اقتصادی تعاون ، خلائی شعبے میں اسرو اور روسکاسموس کے درمیان تعاون، ریلوے، نیوکلیائی، ٹرانسپورٹ، تعلیم اور چھوٹی صنعتوں کے شعبوں میں تعاون کے معاہدے شامل ہیں جبکہ  فرٹیلائزر کے شعبے میں انڈین پوٹاش لمیٹیڈ اور فوس ایگو کے درمیان معاہدے پر بھی دستخط ہوئے ہیں۔روسی صدر ولادیمیر پوٹن اور بھارتی وزیر اعظم نریندرا مودی کے درمیان ہونے والی میٹنگ کے بعد جاری مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ دونوں فریق ایس 400 میزائل خریداری معاہدے کا خیرمقدم کرتے ہیں۔

واضح رہے کہ ایس 400 میزائل فضا سے فضا میں مارکرنے والی جدید ترین ایئرڈیفنس سسٹم ہے جوروس کی سرکاری کمپنی نے تیارکئے ہیں اور یہ فضا میں 380کلومیٹر تک کسی بھی ہدف کو نشانہ بناسکتے ہیں۔ ہندوستانی فضائیہ کے سربراہ ایر چیف مارشل بی ایس دھنووا نے دو دن پہلے ہی کہا تھا کہ ایس 400 میزائل ایر ڈیفنس سسٹم فوج کے لئے بوسٹر ڈوز کی طرح ہے اور اس سے ہندوستان کی فضائی طاقت کئی گنا بڑھ جائے گی. ہندوستانی فضائیہ کے سربراہ کا کہنا تھا کہ چین اور پاکستان کے پاس جدید ترین جنگی طیاروں کو دیکھتے ہوئے ہندوستان کے لئے یہ میزائیل سسٹم انتہائی ضروری ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -