سابق ڈائریکٹرجنرل انوائر منٹ پروٹیکشن اتھارٹی سمیت 9افراد کے خلاف مقدمہ

سابق ڈائریکٹرجنرل انوائر منٹ پروٹیکشن اتھارٹی سمیت 9افراد کے خلاف مقدمہ

  

لاہور(اپنے نمائندے سے) اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ پنجاب کی کلرکہار میں بننے والی غیر قانونی ہاؤسنگ سکیمز کے خلاف انکوائری میں بڑی پیش رفت۔سابق ڈائریکٹر جنرل انوائرنمنٹ پروٹیکشن اتھارٹی لاہور سمیت 9 افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا۔ملزمان نے غیر قانونی ہاوسنگ سکیمز بنواکر قدرتی حسن کو نقصان پہنچایا، فرائض سے غفلت برتی اور دانستہ غیر قانونی اقدام کوسپورٹ کیا۔ کلرکہار کے مقام پر بننے والی ان غیرقانونی ہاؤسنگ سکیمز کے مالکان نے محکمہ ماحولیات سے نہ تو این او سی لیا اور نہ ہی ڈسٹرکٹ کونسل چکوال سے نقشہ منظور کروایا اور قانونی تقاضے پورے کئے بغیر موقع پر تعمیراتی کام کا آغاز کر دیا۔ خوبصورت پہاڑوں کی کٹائی سے ماحول میں آلودگی پیدا ہوئی اور علاقے کے قدرتی حسن کو نقصان پہنچا۔ جس پر کارروائی کرتے ہوئے اینٹی کرپشن راولپنڈی نے قدرتی ماحول کو نقصان پہنچانے والی ان غیرقانونی ہاؤسنگ کالونیز میں جاری تعمیراتی کام کو فوری طور پر روک دیا اور انکوائری کا آغاز کر دیا۔ جس میں یہ بات ثابت ہوئی کالونی مالکان نے محکمہ ماحولیات اور ضلع کونسل چکوال کے افسران سے مل کر غیر قانونی ہاؤسنگ کالونیز بنائیں۔ جس پر اینٹی کرپشن راولپنڈی نے سابق ڈائریکٹر جنرل انوائرمنٹ پروٹیکشن اتھارٹی لاہور محمد تنویر جبار اور ڈائریکٹر جنرل انوائرمنٹ پروٹیکشن اتھارٹی پنجاب عرفان نذیر، اسسٹنٹ ڈائریکٹر ماحولیات فواد علی ڈی او پلاننگ طارق عزیز، انفورسمنٹ انسپکٹر ضلع کونسل شیر علی، ایم اوپی کلرکہار شہباز احمد، سابق سب رجسٹرار مقبول حسین،رجسٹری محرر کلرکہار شبیراحمد اورکالونیز مالکان اخلاق احمد مالک بسم اللہ فارم ہاؤس اور نثار احمد ما لک شالیمار ہلز ہاوسنگ سکیم کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔ انکوائری میں یہ غیر قانونی ہاؤسنگ سکیمز میں سیاسی شخصیات کے ملوث ہونے کا بھی انکشاف ہوا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -