’ایپل کے آئی فون نے مجھے ہم جنس پرست بنا دیا‘ آدمی کا کمپنی کے خلاف انوکھا مقدمہ

’ایپل کے آئی فون نے مجھے ہم جنس پرست بنا دیا‘ آدمی کا کمپنی کے خلاف انوکھا ...
’ایپل کے آئی فون نے مجھے ہم جنس پرست بنا دیا‘ آدمی کا کمپنی کے خلاف انوکھا مقدمہ

  


ماسکو(مانیٹرنگ ڈیسک) روس میں ایک ہم جنس پرست نے امریکی کمپنی ایپل پر مقدمہ دائر کر دیا ہے جس کا دعویٰ ہے کہ ایپل نے دھوکے سے اسے ہم جنس پرست بنا ڈالا۔ برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق ایپل کے خلاف 10ہزار روسی روبل (تقریباً24لاکھ روپے)ہرجانے کا دعویٰ کرنے والے اس ڈی رازومیلوف نامی نوجوان کا کہنا تھا کہ اسے ایک بار آئی فون کی ایک ایپلی کیشن پر ہم جنس پرستوں کے ایک گروپ کی طرف سے ڈیجیٹل کرنسی بھیجی گئی۔ گروپ نے اسے کرپٹو کرنسی کے 69’گے کوائنز‘ بھیجے اور ساتھ ہی پیغام میں کہا کہ ”یہ رقم تب استعمال کرنا جب تم ایک بار ہم جنس پرستی کو ٹرائی کر لو۔

میلوف کا کہنا تھا کہ ”یہ پیغام پڑھ کرمجھے لگا کہ مجھے ہم جنس پرستی کو آزمائے بغیر ہم جنس پرستوں کے بارے میں کوئی رائے قائم نہیں کرنی چاہیے چنانچہ میں نے ایک شخص کے ساتھ ہم جنس پرستی کا تعلق قائم کیا۔ پہلی بار ہی تعلق قائم کرنے کے بعد مجھے ایسی لت پڑی کہ میں اس کا عادی ہو گیا اور جس شخص کے ساتھ میں نے تعلق قائم کیا تھا اس کے ساتھ مجھے محبت ہو گئی، جس سے اب میں باہر نہیں نکل سکتا۔ہم جنس پرستوںکے گروپ کی طرف سے کیے گئے اس ایک میسج نے میری زندگی یکسر بدل کر رکھ دی ہے جو اب دوبارہ کبھی درست راستے پر نہیں آ سکتی۔“ میلوف کے وکیل نے روسی میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ”میرے مو¿کل کو زندگی میں اس تبدیلی سے بہت پریشانیاں اٹھانی پڑ رہی ہیں۔ وہ اپنے والدین کو بھی نہیں بتا سکتا کہ وہ ہم جنس پرست ہو چکا ہے۔ یہ پیغام ایک تھرڈ پارٹی ایپلی کیشن کی طرف سے موصول ہوا تاہم ایپل اپنے پلیٹ فارم پر دی جانے والی تمام سروسز کی ذمہ داری قبول کرتا ہے چنانچہ اسے میرے مو¿کل کو 10لاکھ روبلز ہرجانہ ادا کرنا چاہیے۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...