چیئرمین نیب کی مدت ملازمت میں توسیع کیلئے کوشاں،فیصل کنڈی 

چیئرمین نیب کی مدت ملازمت میں توسیع کیلئے کوشاں،فیصل کنڈی 

  

ڈیرہ اسماعیل خان(بیورورپورٹ)پی پی پی کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات و سابق ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی فیصل کریم کنڈی نے کہا ہے کہ لگتا ہے پی ٹی آئی کا چیئر مین نیب سے معاہدہ ہو چکا ہے اسلئے انکی مدت ملازمت میں توسیع کیلئے کوشاں ہے۔ہم عمران خان کیساتھ نہیں بیٹھ سکتے۔چیئر مین نیب کیلئے نام اپوزیشن لیڈر میاں شہباز شریف کو دیں گے۔وہ ڈیرہ میں اپنی رہائشگاہ کنڈی ماڈل فارم میں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ شیخ رشید کی بات میں صداقت نہیں،پی پی پی کا کوئی سمجھوتہ نہیں ہوا۔قائد ایوان اب ملزم ہے وہ چیئرمین نیب کی نامزدگی و تقرری کے اہل نہیں رہے۔انکے ساتھ بیٹھنا اور مذاکرات کرنا سیاسی خودکشی کے مترادف ہے۔ پی ٹی آئی مشین کے ذریعے اقتدار میں آئی اور مشین کے ذریعے ہی دوبارہ حکومت بنانا چاہتی ہے۔ ہم اپوزیشن کے ساتھ بیٹھنے اور بات چیت کرنے کیلئے تیار ہیں۔یہ بات ناقابل فہم ہے کہ بلوچستان میں وزیر اعلی کیخلاف عدم اعتماد کی تحریک حلال اور پنجاب و وفاق میں حرام ہے۔انہوں نے کہا کہ پی پی پی کے راہنماں کی پی ٹی آئی میں شمولیت بھونڈا مذاق ہے۔ دونوں اشخاص پہلے ہی پی پی پی چھوڑ کر پی ٹی آئی میں جا چکے تھے۔اب انکا پی پی پی سے کوئی تعلق نہیں تھا۔انہوں نے کہا کہ کراچی میں پی ٹی آئی کے ایم پی اے حلیم عادل شیخ عدالتی فیصلوں پر اثر انداز ہونے کی کوشش کر رہے اور انہیں متنازعہ بنانے پر تلے ہوئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پارٹی ہر چار سال بعد تنظیمی قیادت تبدیل کرتی ہے۔چنانچہ خیبر پختونخوا اور جنوبی پنجاب میں تبدیلیاں کی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ خورشید شاہ سے مسلم لیگی راہنماں کی ملاقات اچنبھے کی بات نہیں اور نہ ہی خورشید شاہ کو شوکاز نوٹس جاری کرنیکی خبر میں کوئی حقیقت ہے۔انہوں نے کہا کہ اپوزیشن متحد ہو تو انتخابی اصلاحات و چیئرمین نیب سمیت دیگر امور پر مذاکرات و مشاورت ہو سکتی اور وفاق و پنجاب میں عدم اعتماد کی تحریکیں پیش کی جا سکتی ہیں۔

مزید :

صفحہ آخر -