کورونا، ایئرلائن انڈسٹری کا نقصان 200 ارب ڈالرسے تجاوز کرگیا

کورونا، ایئرلائن انڈسٹری کا نقصان 200 ارب ڈالرسے تجاوز کرگیا

  

  بوسٹن(مانیٹرنگ ڈیسک)  عالمگیر وبا کورونا کی وجہ سے دنیا بھر کی ہوا بازی کی صنعت کو پہنچنے والا نقصان 200 ارب ڈالر سے بڑھ گیا ہے۔عالمگیر وبا کورونا نے دنیا بھر میں کچھ نئی صنعتوں کو بے تحاشا فروغ دیا تو ہمیشہ سے منافع میں رہنے والی کچھ صنعتیں ریت کی دیوار کی طرح زمین بوس ہوگئیں۔ جن میں سے ایک صنعت ہوا بازی کی ہے، کورونا کی وجہ سے ہوا بازی کی صنعت کو پہنچے والا نقصان 200 ارب ڈالر سے تجاوز کرچکا ہے۔ اعداد و شمار کے مطابق مالی سال 2020 سے 2022 میں ایئر لائن انڈسٹری کو پہنچنے والا نقصان ان کے 9 سال میں کمائے گئے منافع کو کھا چکا ہے۔ بلومبرگ میں شایع ہونے والی رپورٹ کے مطابق انٹرنیشنل ایئر ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن (IATA) نے امریکی شہر بوسٹن میں ہونے والی سالانہ کانفرنس میں کہا ہے کہ اگلے سال تک مجموعی طور پر فضائی صنعت کو مزید 11 ارب 60 کروڑ ڈالر نقصان اٹھانا ہوگا۔ اگر چہ ملکی اور علاقائی پروازوں کا آغاز ہوچکا ہے تاہم دنیا بھر میں ہوا بازی کی صنعت کو کورونا کی وجہ سے ہونے والے نقصانات سے نکلنے کے لیے وقت لگے گا۔IATA کے اعداد و شمار کے مطابق وبا کے دوران ہوا بازی کی صنعت کو مجموعی طور پر 201 ارب ڈالر کا نقصان ہوچکا ہے، جو کہ اس صنعت کی 9 سالہ آمدن کے برابر ہے۔ ایسوسی ایشن نے مزید کہا کہ ہم نے رواں سال کے لیے اپنے نقصان کے تخمینے کو بڑھا تے ہوئے 2022 کے خسارے پر بھی نظر ثانی کی ہے۔IATA  کے ڈائریکٹر جنرل ولی ویلش کا اس بارے میں کہنا ہے کہ کورونا بحران کی وجہ سے ایئر لائنز کو پہنچے والے نقصان کی وسعت بہت زیادہ ہے۔  لوگوں میں سفر کرنے کی خواہش ختم نہیں ہوئی ہے کیونکہ ملکی مارکیٹ میں سفر کرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے لیکن انہیں کورونا کی پیچیدگیوں، غیر یقینی صورت حال اور پابندیوں کی وجہ سے بین الاقوامی سفر کرنے سے روکا جا رہا ہے۔

  ایئرلائن

مزید :

صفحہ اول -