تمام جامعات کی ایڈمسٹریشن پیشہ ورانہ بنیادوں پر استوار کرنے کا فیصلہ 

تمام جامعات کی ایڈمسٹریشن پیشہ ورانہ بنیادوں پر استوار کرنے کا فیصلہ 

  

         پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبرپختونخوا کی سرکاری جامعات کا بہترین نظم و نسق یقینی بنانے کیلئے ان تمام جامعات کی ایڈمنسٹریشن کو خالصتاً سپیشلائزڈ اور پیشہ ورانہ بنیادوں پر استوار کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے اس سلسلے میں پیر کے روز گورنر خیبرپختونخوا شاہ فرمان سے وزیراعلیٰ کے معاون خصوصی برائے اعلیٰ تعلیم و اطلاعات کامران بنگش نے گورنر ہاؤس پشاور میں ملاقات کی ملاقات میں معاون خصوصی نے گورنر شاہ فرمان اور وزیراعلیٰ محمود خان کی طرف سے خیبرپختونخوا میں اعلیٰ تعلیم کے فروغ کیلئے اٹھائے گئے اقدامات پر تفصیلی بریفنگ دی گئی گورنر شاہ فرمان نے اس امر کو سراہا کہ پشاور، مردان، ہری پور اور ملاکنڈ سمیت خیبرپختونخوا کی پانچ یونیورسٹیاں اپنی اعلیٰ کارکردگی کی بنیاد پر عالمی رینکنگ میں شامل کی گئی ہیں تاہم ضرورت اس امر کی ہے کہ ایڈمنسٹریشن کے عالمی معیارات کو اپناتے ہوئے صوبہ کی تمام سرکاری یونیورسٹیوں کی انتظامیہ کو مکمل طور پر سپیشلائزڈ اور پیشہ ورانہ بنیادوں پر چلایا جائے تاکہ تدریس و تحقیق اور انتظامیہ کے شعبے موثر طور پر ذمہ داریاں سرانجام دے سکیں گورنر خیبرپختونخوا نے صوبہ میں پہلی مرتبہ 30 سرکاری جامعات میں بجٹ اجلاسوں کے انعقاد اور بجٹ منظوری کو ان یونیورسٹیوں میں مالیاتی نظم و ضبط (فنانشل ڈسپلن) کی جانب اہم پیش رفت قرار دیا اور واضح کیا کہ سرکاری جامعات میں مالیاتی نظم و ضبط پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا کامران بنگش نے اس موقع پر کورونا وباء سے نمٹنے کی حکومتی کوششوں میں خیبر میڈیکل یونیورسٹی (کے ایم یو) پشاور کی کارکردگی سے متعلق بتایا کہ مشکل حالات اور چیلنجز کے باوجود کے ایم یو نے کورونا ٹسٹنگ کا آغاز کیا اور روزانہ کی بنیاد پر 15 ہزار ٹسٹ کرنے کا ہدف کامیابی سے حاصل کیا جبکہ یہاں کورونا سے تحفظ کیلئے ماس اینڈ ڈرائیو تھرو ویکسینیشن سنٹر کا قیام عمل میں لایا گیا جہاں روزانہ 3 ہزار سے زائد افراد کی ویکسینیشن کی جا رہی ہے جس میں معذور اور عمر رسیدہ ضعیف افراد کی انکی گاڑیوں میں بیٹھے ہی ویکسینیشن شامل ہے۔

مزید :

صفحہ اول -