ڈاکوؤں کے ہاتھوں لٹنے والے شہری کا مقدمہ درج نہ ہو سکا

ڈاکوؤں کے ہاتھوں لٹنے والے شہری کا مقدمہ درج نہ ہو سکا
 ڈاکوؤں کے ہاتھوں لٹنے والے شہری کا مقدمہ درج نہ ہو سکا

  

لاہور(کرائم سیل)تھانہ گارڈن ٹاؤن کے ایس ایچ او نے ڈاکوؤں کے ہاتھوں لٹنے والے محنت کش کامقدمہ درج کرنے سے انکار کردیا۔ مذکورہ ایس ایچ او کا سائل کے ساتھ ہتک امیز رویہ جبکہ پولیس اہلکاروں نے بھی دھکے دے کر تھانے سے باہرنکال دیا۔متاثرہ شہری 5روز تک تھانے میں دھکے کھانے کے بعد انصاف کے حصول کے لئے روزنامہ" پاکستان" کے دفتر پہنچ گیا۔تفصیلات کے مطابق کاہنہ کے رہائشی ریاض احمد بھٹی کے مطابق30اگست کی رات تقریباساڑھے 9بجے وہ کلمہ چوک پل سے اپنی موٹرسائیکل پر جارہاتھا کہ اسی اثناء میں موٹرسائیکل سوار 2نامعلوم ڈاکوؤں نے اسے روکنے کے بعد گن پوائنٹ پر 16ہزار کی نقدی چھین لی جبکہ مزاحمت کرنے پر فائرنگ بھی کی لیکن وہ معجزانہ طور پر محفوظ رہا ،بعدازاں ڈاکو موقع سے فرار ہوگئے ۔وقوع کی اطلاع 15پر دی گئی لیکن پولیس 20منٹ بعد جائے وقوعہ پر پہنچی ۔متاثرہ شخص نے نمائندہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے الزام عائد کیا ہے کہ ایس ایچ او سمیت تھانے کے دیگر عملے کا رویہ انتہائی ہتک امیز ہے ،اس کی دادرسی کی بجائے اسے تھانے میں دھکے دے کر باہر نکال دیا گیا ۔متاثرہ شخص کا مزید کہنا ہے کہ مقدمہ کے اندراج کے لئے وقوعہ کے روز ہی اس نے تھانے میں درخواست دے دی تھی لیکن 5روز سے وہ تھانے میں دھکے کھا رہا ہے لیکن اس کی شنوائی نہیں ہورہی ،مقامی ایس ایچ او سہیل بھی ہربار اگلے دن کا وقت دے کر ٹال مٹول سے کام لے رہا ہے اورتھانے کادیگر عملے کا رویہ بھی سائل کے ساتھ انتہائی شرمناک ہے ۔متاثرہ شخص نے پولیس حکام سے اپیل کی ہے کہ اس کا مقدمہ درج کیا جائے اور متعلقہ ایس ایچ او کے خلاف بھی کارروائی عمل میں لائی جائے ۔اس حوالے سے ایس ایچ او گارڈن ٹاؤن سے رابطہ کیا گیا لیکن متعدد بار رابطہ کرنے کے باوجود رابطہ ممکن نہ ہو سکا۔

مزید : علاقائی