گیس سے بجلی کے حصول کیلئے منصوبوں کی فزیبلٹی رپورٹس تیارہو چکی ہیں ،شہباز شریف

گیس سے بجلی کے حصول کیلئے منصوبوں کی فزیبلٹی رپورٹس تیارہو چکی ہیں ،شہباز ...

 لاہور(جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے لندن کے طویل سفر کے بعد بغیر آرام کئے لاہور میں اعلیٰ سطح کے اجلاس کی صدارت کی جس میں صوبے میں توانائی منصوبوں خصوصاً گیس سے بجلی کی پیداوار کے پراجیکٹس کے مختلف امور پر پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ توانائی منصوبوں کی جلد تکمیل کیلئے ہرممکن وسائل بروئے کار لائے جا رہے ہیں۔موجودہ حکومت نے بجلی کے منصوبوں کے لئے جتنی سنجیدہ کاوشیں کی ہیں اس کی ملک کی تاریخ میں مثال نہیں ملتی ۔ توانائی بحران سے نمٹنے کیلئے ہر ضروری قدم اٹھایاجا رہاہے۔پنجاب میں کوئلے،گیس ،ہائیڈل، سولراور دیگر متبادل ذرائع سے بجلی کے حصول کے منصوبوں پر برق رفتاری سے کام کیا جا رہاہے جبکہ صوبے میں گیس سے 3600میگا واٹ بجلی پیدا کرنے کی بھی منصوبہ بندی کرلی گئی ہے،جس کے تحت پنجاب حکومت اپنے وسائل سے 1200 میگاواٹ کا گیس پاورمنصوبہ شیخوپورہ کے علاقے بھکی میں لگا رہی ہے جبکہ وفاقی حکومت 1200میگا واٹ کا گیس پاور کاایک منصوبہ بلوکی اور 1200میگا واٹ کا گیس پاور کاایک منصوبہ حویلی بہادر شاہ ،جھنگ میں لگائے گی۔انہوں نے کہا کہ گیس سے بجلی کے حصول کے لئے تینوں منصوبوں کی فزیبلٹی رپورٹس تیار ہو چکی ہیں ۔وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ گیس سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبوں کے حوالے سے تمام ضروری امور جلد سے جلد طے کئے جائیں کیونکہ ایک ایک لمحہ قیمتی ہے جہاں بھی وقت بچ سکے، بچایا جائے۔متعلقہ وفاقی و صوبائی ادارے مربوط کوآرڈینیشن کے تحت ان منصوبوں کو آگے بڑھائیں اوران منصوبوں کے ا مور کو مقررہ مدت میں مکمل کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ شفافیت، اعلیٰ معیار اور تیز رفتاری سے منصوبوں کی تکمیل ہماری پالیسی کا بنیادی جز ہے۔ 2017 تک توانائی کے متعدد منصوبوں سے بجلی کی پیداوار شروع ہوجائے گی۔چیئرمین پنجاب پاور ڈویلپمنٹ کمپنی عارف سعید، ایڈیشنل چیف سیکرٹری توانائی، متعلقہ حکام اور جرمنی کی توانائی سے وابستہ کمپنی کے اعلیٰ حکام نے بھی اجلاس میں شرکت کی۔

مزید : صفحہ اول