وہ باپ جس نے خودکشی کا فیصلہ کیا لیکن مرنے سے پہلے اپنی 7 سالہ بچی کی جان بھی لے گیا، اس خوفناک اقدام کی ایسی وجہ کہ ذہن کو چکرا دے

وہ باپ جس نے خودکشی کا فیصلہ کیا لیکن مرنے سے پہلے اپنی 7 سالہ بچی کی جان بھی ...
وہ باپ جس نے خودکشی کا فیصلہ کیا لیکن مرنے سے پہلے اپنی 7 سالہ بچی کی جان بھی لے گیا، اس خوفناک اقدام کی ایسی وجہ کہ ذہن کو چکرا دے

  

لندن (نیوز ڈیسک) گزشتہ سال ستمبر میں اپنے گھر کے دروازے پر قتل کی جانے والی سات سالہ معصوم بچی کے قاتل اور اس بھیانک جرم کی وجوہات سے حالیہ عدالتی کارروائی کے دوران پردہ اٹھا تو سننے والے دم بخود رہ گئے۔

مریم الرومسے، جسے میری شپ سٹون بھی کہا جاتا تھا، اپنے گھر کے دروازے پر اپنی والدہ کے ساتھ کھڑی تھی کہ اسے گولیاں مار کر ہلاک کردیا گیا۔ ایسٹ سسیکس کے علاقے میں ہونے والے اس دلخراش واقعے نے سارے شہر کو افسردہ کردیا تھا اور لوگ یہ جان کر سخت دل گرفتہ ہوئے کہ ننھی مریم کو قتل کرنے والا کوئی اور نہیں اس کا اپنا باپ تھا۔ بچی کی والدہ لنڈسے نے عدالت میں انکشاف کیا کہ اس کا سابقہ شوہر یاسرالرومسے اس پر ظلم و تشدد کرتا تھا اور اس سے علیحدگی کے بعد مشرقی سسیکس کے علاقے میں اس سے چھپ کر رہ رہی تھیں۔

مزیدپڑھیں:26 سالہ نوجوان لڑکی خود کشی سے پہلے 2 روز انٹرنیٹ پر کیا سرچ کرتی رہی؟ جان کر کوئی بھی پریشان ہوجائے

لنڈسے کا کہنا تھا کہ یاسر ان سے نفرت کرتا تھا لیکن اس نے بدلہ اپنی معصوم بچی سے لیا۔ لنڈسے کے خیال میں وہ خودکشی کرنا چاہتا تھا لیکن خود دنیا سے جانے سے پہلے ننھی مریم کو بھی قتل کرگیا تاکہ وہ اس کی یاد میں تمام عمر تڑپتی رہیں۔ لنڈسے کا کہنا ہے کہ ان کے سابقہ شوہر نے بچی کو قتل کرکے خودکشی کرلی لیکن انہیں تمام عمر کیلئے رونے اور تڑپنے پر مجبور کردیا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس