طنزیہ ٹویٹ، امریکہ کو چین سے معذرت کرناپڑگئی، ہم اچھے دوست ہیں: اوباما

طنزیہ ٹویٹ، امریکہ کو چین سے معذرت کرناپڑگئی، ہم اچھے دوست ہیں: اوباما
طنزیہ ٹویٹ، امریکہ کو چین سے معذرت کرناپڑگئی، ہم اچھے دوست ہیں: اوباما

  


نیویارک (ویب ڈیسک )ایک امریکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ امریکہ کی ڈیفنس ا نٹیلی جنس ایجنسی کے اکاﺅنٹ سے ایک طنزیہ ٹویٹ نے امریکہ اور چین کے تعلقات کو ایک بار پھر کشیدہ بنا دیا ہے یہ ٹویٹ صدر باراک اوباما کے چین میں پروٹوکول کے متعلق تھا ۔

بتایا جاتا ہے کہ امریکی صدر باراک اوباما جب جی 20 گروپ کے اجلاس میں شرکت کے لئے چین پہنچے تو چینی حکام نے انکے استقبال کے لئے ریڈ کارپٹ نہ بچھایا انہیں جہاز کے دوسرے راستے سے باہر لیجایا گیا ۔ امریکی ذرائع ابلاغ اس واقعہ کو چین کی جانب سے امریکہ سے ناراضگی کا سبب بتا رہے ہیں، اس حوالے سے امریکی ڈیفنس ا نٹیلی جنس ایجنسی کے اکاﺅنٹ سے جاری ایک ٹویٹ میں طنزیہ انداز میں تعریف کرتے ہوئے کہا گیا کہ "ہمیشہ کی طرح شاندار چین "جب چین نے اس ٹویٹ کو اپنی بے عزتی تصور کرتے ہوئے احتجاج کیا تو چند ہی منٹ بعد اسے ٹائم لائن سے ہٹا دیا گیا ۔

’یہ گیند اس ٹوکری میں ڈال دو تو پوری کلاس کو اے گریڈ دے دوں گا‘ ٹیچر کا طالبعلم کو چیلنج، لڑکے نے گیند پھینکی تو پھر کیا ہوا؟ دیکھئے وہ واقعہ جس نے دنیا بھر میں ہلچل مچادی

ایجنسی نے بعد میں اس ٹویٹ پر معذرت کرتے ہوئے کہا کہ آج ہمارے اکاﺅنٹ سے ایک نیوز آرٹیکل کے بارے میں غلطی سے ایک ٹویٹ جاری ہو گیا تھا جو ایجنسی کی پالیسی کی ترجمانی نہیں کرتا ۔ دوسری طرف امریکی صدر باراک اوباما نے اخبار نویسوں سے کہا کہ وہ اس بات کو بڑھا چڑھا کر پیش نہ کریں امریکہ اور چین کے تعلقات میں کوئی تناﺅنہیں ہم اچھے دوست ہیں۔

مزید : بین الاقوامی