پھر ہوا وقت کہ ہو بال کشا موجِ شراب

پھر ہوا وقت کہ ہو بال کشا موجِ شراب
پھر ہوا وقت کہ ہو بال کشا موجِ شراب

  

پھر ہوا وقت کہ ہو بال کشا موجِ شراب

دے بطِ مے کو دل و دستِ شنا موجِ شراب

پوچھ مت وجہ سیہ مستیِ اربابِ چمن

سایۂ تاک میں ہوتی ہے ہَوا موجِ شراب

جو ہوا غرقۂ مے بختِ رسا رکھتا ہے

سر سے گزرے پہ بھی ہے بالِ ہما موجِ شراب

ہے یہ برسات وہ موسم کہ عجب کیا ہے اگر

موجِ ہستی کو کرے فیضِ ہوا ،موجِ شراب

چار موج اٹھتی ہے طوفانِ طرب سے ہر سو

موجِ گل، موجِ شفق، موجِ صبا، موجِ شراب

جس قدر روح نباتی ہے جگر تشنۂ ناز

دے ہے تسکیں بَدَمِ آبِ بقا موجِ شراب

بس کہ دوڑے ہے رگِ تاک میں خوں ہوہوکر

شہپرِ رنگ سے ہے بال کشا موجِ شراب

موجۂ گل سے چراغاں ہے گزرگاہِ خیال

ہے تصوّر میں ز بس جلوہ نما موجِ شراب

نشّے کے پردے میں ہے محوِ تماشاۓ دماغ

بس کہ رکھتی ہے سرِ نشو و نما موجِ شراب

ایک عالم پہ ہیں طوفانیِ کیفیّتِ فصل

موجۂ سبزۂ نوخیز سے تا موجِ شراب

شرحِ ہنگامۂ مستی ہے، زہے! موسمِ گل

رہبرِ قطرہ بہ دریا ہے، خوشا موجِ شراب

ہوش اڑتے ہیں مرے، جلوۂ گل دیکھ، اسدؔ

پھر ہوا وقت، کہ ہو بال کشا موجِ شراب

شاعر: مرزا غالب

Phir Hua Waqt Keh  Mu  Baal Kucha Maoj e Sharaab

Day Bat e May Ko Dil o Dost Shana , Maoj e Sharaab

Pooch Mat Waj e Siaa Masti e  Arbaab e Chaman

Saaya e Taak Men Hoti Hay Hawa, Maoj e Sharaab

Jo Hua Gharqa e May Bakht e Rasaa Rakhta Hay

Sar Say Guzray Pa Bhi Hay Baal e Huma, Maoj e Sharaab

hay Yeh Barsaat Wo Mosam Keh Ajab Kia Hay Agar

Moj e Hasti Ko Karay Faiz Hawaa Maoj e Sharaab

Chaar Moj Uthti Hay Tufaan  e  Tarab Say Har Su

Moj e Gull , Moj e Shafaq, Moj e Saba, Maoj e Sharaab

Jiss Qadar Rooh Nabaataati Hay Jigar Tashna e Naaz

Day Hay Taskeen ba Dam Aab e Baqa ,Maoj e Sharaab

bas Keh Dorray Hay Rag  e Taak Men Khoon Ho ho Kar

Shehpar  e Rang Say Hay Baal KUsha,Maoj e Sharaab

Moja e Gull Say Gharaaghaan Hay Guzar gaah e Khayaal

Hay Tasawwar Men Zabas Jalwa Numa, Maoj e Sharaab

Nashay K Parday Men Hay Mehv e Tamaasha e Dimaagh

Bass Keh Rakhti Hay Sar e Nashv o Numa Maoj e Sharaab

Sharh e Hangaama e Hasti Hay Zahay, Maosam e Gull 

Rehbar e Qatra Ba darya hay , Khosha ,Maoj e Sharaab

Hosh Urrtay Hen Miray , Jalwa e Gull Dekh ASAD

Phir Hua Waqt Keh Ho baal Kusha , Maoj e Sharaab

Poet: Mirza Ghalib

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -