سینی ٹائزر کے استعمال کے دوران بے احتیاطی، خاتون کا جسم جھلس گیا

سینی ٹائزر کے استعمال کے دوران بے احتیاطی، خاتون کا جسم جھلس گیا
سینی ٹائزر کے استعمال کے دوران بے احتیاطی، خاتون کا جسم جھلس گیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) کورونا وائرس کی وجہ سے ہینڈ سینی ٹائزرز کا استعمال عام ہو چکا ہے جس کی وجہ سے کچھ افسوسناک حادثات بھی پیش آ رہے ہیں۔ گزشتہ دنوں امریکہ میں ایک خاتون ہینڈ سینی ٹائزر کی وجہ سے آگ لگنے سے بری طرح جھلس گئی اور اس کا گھر بھی جل کر خاکستر ہو گیا۔ میل آن لائن کے مطابق امریکی ریاست ٹیکساس کے شہر آسٹن کی رہائشی کیٹی وائس نامی اس خاتون نے ہاتھوں میں ہینڈ سینی ٹائزر لگارکھا تھا اور سینی ٹائزر لگاتے ہی اس نے موم بتی جلانے کی کوشش کر ڈالی۔

رپورٹ کے مطابق ہینڈ سینی ٹائزر میں چونکہ الکوحل ہوتی ہے لہٰذا اس الکوحل نے آگ پکڑ لی اور کیٹی کے ہاتھوں سے شعلے اٹھنے لگے۔ اس نے سینی ٹائزر کی بوتل بھی قریب ہی رکھی ہوئی تھی اور اس نے بھی آگ پکڑ لی اور دھماکے سے پھٹ گئی جس سے پورے کمرے میں آگ پھیل گئی اور کیٹی کا پورا جسم آگ کی لپیٹ میں آ گیا۔ اس کی معذور بیٹی اور کتا دوسرے کمرے میں موجود تھے۔ آگ سے بچ نکلنے کے بعد کیٹی نے اپنی بیٹی اور کتے کو لیا اور گھر سے باہر بھاگ گئی اور ریسکیو ورکرز کو کال کر دی جنہوں نے آ کر آگ پر قابو پایا۔ رپور ٹ کے مطابق کیٹی کو اس افسوسناک واقعے میں چہرے، ہاتھوں اور پیروں پر دوسرے اور تیسرے درجے کے زخم آئے۔ مجموعی طور پر اس کا 18فیصد جسم جھلس گیا۔ہسپتال میں کیٹی کا علاج جاری ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -