بھارت میں PUBG کی بندش کے بعد صرف 2 روز میں کمپنی کو 34 ارب ڈالر کا جھٹکا لگ گیا

بھارت میں PUBG کی بندش کے بعد صرف 2 روز میں کمپنی کو 34 ارب ڈالر کا جھٹکا لگ گیا
بھارت میں PUBG کی بندش کے بعد صرف 2 روز میں کمپنی کو 34 ارب ڈالر کا جھٹکا لگ گیا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں تین روز قبل معروف ویڈیو گیم ’پب جی‘ پر پابندی عائد کی گئی تھی اور اب بھارتی میڈیا کی طرف سے اس حوالے سے نیا دعویٰ کر دیا گیا ہے۔ بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ بھارت میں پب جی پر پابندی لگنے کے بعد صرف دو دن میں اس گیم کی مالک کمپنی کو 34ارب ڈالر کا نقصان پہنچ چکا ہے۔بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق چینی کمپنی کو پہنچے والے اس نقصان کی ابتداءپب جی، وی چیٹ اور اس کی دیگر ایپلی کیشنز پر امریکہ اور دیگر کئی ممالک میں لگنے والی پابندی سے ہوئی۔

بلومبرگ کے مطابق پب جی کی مالک چینی کمپنی کی مارکیٹ ویلیو میں اس وقت کمی آنی شروع ہوئی جب امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ نے ڈیٹا چوری کرنے کا الزام لگا کر ’وی چیٹ‘ پر پابندی عائد کی۔ اس کے ساتھ ہی آسٹریلیا اور دیگر کئی مغربی ممالک نے بھی اس کمپنی کی ایپلی کیشنز پر پابندی عائد کر دی۔ بھارت نے تین روز قبل پب جی اور وی چیٹ سمیت 118چینی ایپلی کیشنز پر پابندی عائد کی ہے، جس کے بعد کمپنی کے نقصان کی شرح تیزی سے بڑھنے لگی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -