پنجاب میں ترقیاتی بجٹ کا صرف10فیصد استعمال شرمناک ہے

پنجاب میں ترقیاتی بجٹ کا صرف10فیصد استعمال شرمناک ہے

لاہور(سپیشل رپورٹر ) مسلم لیگ پنجاب کے ترجمان نے پنجاب حکومت کی طرف سے ترقیاتی بجٹ کے محض 10 فیصد استعمال کی رپورٹس پر اپنے شدید ردعمل میں کہا کہ یہ بیڈ گورننس اور شرمناک انتظامی کارکردگی ہے ، مسلم لیگ پنجاب کی پارلیمانی پارٹی اس پرتحریک التوائے کار بھی جمع کروائے گی، ترجمان نے کہا کہ سرکاری رپورٹ کے مطابق پنجاب سب سے کم ترقیاتی بجٹ استعمال کرنے والا صوبہ ہے ، 6 سال بعد بھی پنجاب حکومت بجٹ کے استعمال کی استعداد کار نہیں بڑھا سکی ، ترجمان نے کہا کہ چودھری پرویز الہٰی دور کے درجنوں عوامی منصوبے جو سوچ بچار اور بہترین منصوبہ بندی کے ساتھ شروع کیے گئے تھے ، انہیں 6 سال " بلڈ پریشر" کی وجہ سے بند رکھا گیا اور اب پریشر کم ہونے پر پنجاب حکومت انہی منصوبوں کو دوبارہ شروع کرنے پر مجبور ہے ، مری کا بلک واٹر سپلائی منصوبہ بھی ان میں سے ایک ہے ،ترجمان نے کہا کہ وزیر آباد کارڈیالوجی ہسپتال پر بھی سپریم کورٹ نے نوٹس لے رکھا ہے جو پنجاب حکومت کے انتقامی رویے کا شکار ہے ، پنجاب اسمبلی کی عمارت کا میگا منصوبہ بھی نا مکمل منصوبوں میں سے ایک ہے ، انہوں نے کہا کہ منصوبوں کے بروقت مکمل نہ ہونے کے باعث خزانے پر اربوں روپیہ کا اضافی بوجھ پڑ چکا ہے ، جن کے ذمہ داروں کا تعین کرنا پڑے گا ، ترجمان نے کہا کہ پنجاب میں ترقیاتی بجٹ کو صوابدیدی رقوم کی طرح استعمال کرنے کی روایت چھٹے سال بھی جاری ہے

مزید : میٹروپولیٹن 1