صنعتی ترقی کیلئے انڈسٹریز کو بجلی کی لوڈشیڈنگ سے مستثنیٰ قرار دیا جائے‘ظہیر بھٹہ

صنعتی ترقی کیلئے انڈسٹریز کو بجلی کی لوڈشیڈنگ سے مستثنیٰ قرار دیا ...

لاہور(وقائع نگار )چیئرمین لاہور ٹاؤن شپ انڈسٹریز ایسوسی ایشن ظہیر بھٹہ نے ٹاؤن شپ انڈسٹریل اسٹیٹ میں لوڈشیڈنگ کے بڑھتے ہوئے دورانیہ پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ انڈسٹریل ایریا میں کئی کئی گھنٹوں کی بجلی کی بندش کی وجہ سے صنعتیں بند صنعتکار پریشانی اور مزدور طبقہ بے روزگاری کا شکار ہورہے ہیں،بجلی کی بدترین لوڈشیڈنگ کے باعث صنعتیں اپنی پیداواری صلاحیت کے مطابق کام نہیں کرپارہی جس کی وجہ سے ان کے معاہدے متاثر ہورہے ہیں اور انہیں بے پناہ مالی مشکلات کا سامنا ہے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے خالد افضل شیخ سینئر وائس چیئرمین ،نعمان حسین وائس چیئرمین کے ساتھ ٹاؤن شپ انڈسٹریز کے صنعتکاروں کے مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا کہ بدترین لوڈشیڈنگ کے باوجودلاہور کے نزدیک چار پرائیویٹ ریشما، اٹلس، جاپان اور کیپکول پاور پلانٹس بند ہونا تشویشناک امر ہے جبکہ یہ پاو ر پلانٹس دوسرے پاور پلانٹس کی نسبت سستی بجلی دینے کیلئے بھی تیار ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ نیپرا فی الفو رسستی بجلی کی پیشکش کرنے والے چاروں پاور پلانٹ سے معالات جلد ازجلد نمٹائے جائیں اوران پاور پلانٹ سے اپنے معاہدوں کو حتمی شکل دے کر ان پاور پلانٹس کو فعال کرے تاکہ بجلی کی لوڈ شیڈنگ کے دورانیہ میں کمی واقع ہوسکے اور لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ ممکن ہوسکے۔ظہیر بھٹہ نے کہا کہ توانائی بحران کے خاتمہ سے ہی صنعتی یونٹ پوری پیداواری صلاحیت سے کام کرسکیں گے،اس سے حکومت کی صنعتی ترقی کا خواب بھی شرمندہ تعبیر ہوگا اوربجلی بحران کے خاتمہ کے بعد نئی انڈسٹریز کے قیام سے ملک میں روزگار کے وافر مواقع فراہم ہونگے اور بے روزگاری جیسے اہم مسئلہ پر بھی قابو پایا جاسکے گا۔

مزید : کامرس