درجہ حرارت بڑھنے سے بجلی کی ڈیمانڈ میں اضافہ ،12 سے 16 گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ شروع

درجہ حرارت بڑھنے سے بجلی کی ڈیمانڈ میں اضافہ ،12 سے 16 گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ شروع

 لاہور(وقائع نگار) ملک کے بیشتر علاقوں میں موسم خشک رہنے کے باعث درجہ حرارت بڑھنے سے پنکھوں کا استعمال ایک بار پھر شروع ہو گیا جس سے بجلی کی ڈیمانڈ میں اضافہ کا رجحان شروع ہو گیا ہے تاہم دوسری جانب گزشتہ روز ملک میں ہفتہ وار تعطیل کے باعث بجلی کی مجموعی ڈیمانڈ کم رہی جس کے باعث لوڈ شیڈنگ کے دورانیہ میں کمی کر دی گئی مرمت کے نام پر بھی بجلی کی بندش کا سلسلہ بند ہی رکھا گیا ۔ گزشتہ روز شہروں میں اٹھ گھنٹے اور دیہی علاقوں میں چودہ گھنٹے تک کی لوڈ شیڈنگ کی گئی ۔ آج ملک میں ہفتہ وار تعطیل کے بعد معمول کی سرگرمیاں شروع ہونے پر بجلی کی ڈیمانڈ میں ایک بار پھر اضافہ ہو جائے گا جس سے شارٹ فال بڑھ جائے گا شارٹ فال میں اضافہ پر لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ بڑھ جائے گا ۔ ڈیموں سے پانی کے اخراج میں کمی کے باعث ہائیڈل کی پیداوار کم ہو کر صرف دو ہزار میگاواٹ کی سطح پر آ گئی ہے ۔ حکومت کی جانب سے عدم ادائیگی کے باعث تھرمل اور ائی پی پیز کی پیداوار بھی گنجائش کے مقابلہ میں آدھی ہے ۔ آنے والے دنوں میں بجلی کی ڈیمانڈ میں مرحلہ وار اضافہ ہو جائے گا اگر پیداوار میں اضافہ کے لئے فوری طور پر اقدامات نہ ہوئے تو ملک میں بدترین لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ شروع ہو جائے گا ۔ گزشتہ روز بجلی کی مجموعی ڈیمانڈ 12310 میگاواٹ جبکہ پیداوار 8440 میگاواٹ رہی طلب و رسد میں 3870 میگا واٹ کا فرق رہا ۔ لوڈ شیڈنگ درجہ حرارت بڑھنے سے بجلی کی ڈیمانڈ میں اضافہ ،12 سے 16 گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ شروع لاہور(وقائع نگار) ملک کے بیشتر علاقوں میں موسم خشک رہنے کے باعث درجہ حرارت بڑھنے سے پنکھوں کا استعمال ایک بار پھر شروع ہو گیا جس سے بجلی کی ڈیمانڈ میں اضافہ کا رجحان شروع ہو گیا ہے تاہم دوسری جانب گزشتہ روز ملک میں ہفتہ وار تعطیل کے باعث بجلی کی مجموعی ڈیمانڈ کم رہی جس کے باعث لوڈ شیڈنگ کے دورانیہ میں کمی کر دی گئی مرمت کے نام پر بھی بجلی کی بندش کا سلسلہ بند ہی رکھا گیا ۔ گزشتہ روز شہروں میں اٹھ گھنٹے اور دیہی علاقوں میں چودہ گھنٹے تک کی لوڈ شیڈنگ کی گئی ۔ آج ملک میں ہفتہ وار تعطیل کے بعد معمول کی سرگرمیاں شروع ہونے پر بجلی کی ڈیمانڈ میں ایک بار پھر اضافہ ہو جائے گا جس سے شارٹ فال بڑھ جائے گا شارٹ فال میں اضافہ پر لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ بڑھ جائے گا ۔ ڈیموں سے پانی کے اخراج میں کمی کے باعث ہائیڈل کی پیداوار کم ہو کر صرف دو ہزار میگاواٹ کی سطح پر آ گئی ہے ۔ حکومت کی جانب سے عدم ادائیگی کے باعث تھرمل اور ائی پی پیز کی پیداوار بھی گنجائش کے مقابلہ میں آدھی ہے ۔ آنے والے دنوں میں بجلی کی ڈیمانڈ میں مرحلہ وار اضافہ ہو جائے گا اگر پیداوار میں اضافہ کے لئے فوری طور پر اقدامات نہ ہوئے تو ملک میں بدترین لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ شروع ہو جائے گا ۔ گزشتہ روز بجلی کی مجموعی ڈیمانڈ 12310 میگاواٹ جبکہ پیداوار 8440 میگاواٹ رہی طلب و رسد میں 3870 میگا واٹ کا فرق رہا ۔ لوڈ شیڈنگ

مزید : صفحہ آخر