شاد باغ ،نوجوان کی پُر اسرار ہلاکت پھوپھی زاد بھائیوں پر قتل کا الزام

شاد باغ ،نوجوان کی پُر اسرار ہلاکت پھوپھی زاد بھائیوں پر قتل کا الزام

 لاہور(کرائم سیل )شادباغ کے علاقے میں پھوپھی کے بیٹوں نے 22سالہ کزن کو زہر دے کر قتل کر دیا اور چھت سے گرکر ہلاک ہونے کا ڈرامہ رچا دیا ، پولیس کے مقدمہ درج کرنے سے انکار پرلواحقین کا شدید احتجاج ۔بتایا گیا ہے کہ شادباغ کے علاقے نیلم سنیما کا رہائشی 22 سالہ شیخ عمر نامی نوجوان اپنی پھوپھی کے گھر ملنے کے لیے نیلم سنیما سے ملحقہ گلی میں گیا ہوا تھا جب کافی وقت گزر جانے کے بعد وہ گھر نہ پہنچا تو اس کے گھر والوں نے اس کی پھوپھی کے گھر جا کر اس کا پتہ کیا تو انہوں نے بتایا کہ شیخ عمر چھت سے گر گیا ہے اس کے کزن عادل اور دلاور اس کو لے کر ہسپتال گئے ہیں تھوڑی دیر بعد عادل نے عمر کے گھر والوں کو فون کر کے بتایا کہ عمر ہسپتال میں دم توڑ گیا ہے ہم اس کی لاش لے کر گھر آرہے ہیں جب وہ لوگ عمر کی لاش لے کر گھر پہنچے تو گھر والوں نے سارا ماجرا پوچھا کہ عمر کیسے چھت سے گرا تو دلاور اور عادل نے دو مختلف بیان دیے اور وہاں سے غائب ہو گئے جس پر اہلخانہ کو شک گزرا کہ دلاور اور عادل نے شیخ عمر کو قتل کیا ہے تو انہوں نے تھانہ شادباغ جا کر پولیس کو سارا ماجرا بیان کیا اور ان کے خلاف مقدمہ درج کر نے کا کہا جس پر تھانہ شادباغ کے پولیس اہلکاروں نے مقدمہ درج کرنے سے انکار کر دیا۔ لواحقین کا کہنا تھا شیخ عمر کے والد شیخ عار ف نے اپنی بہن اپنا مکان رہنے کے لیے دے رکھا تھا جو اس نے خالی کروا لیا اسی دوران ملزمان نے اپنے ماموں شیخ عارف کے گھر سے زیور اور نقدی بھی چوری کی جس کا علم شیخ عارف کو ہو گیا تو اس نے اپنے بھانجھوں عادل اور دلاور سے استفار کیا تو انہوں نے معافی مانگ لی اور کہا کہ ان سے غلطی ہو گئی ان کو معاف کر دیں جس پر شیخ عارف نے ان کو برا بھلا کہہ کر گھر سے نکال دیا جس کی رنجش ملزمان نے اپنے دل میں رکھی گزشتہ روز جب شیخ عارف کسی کام کے سلسلے میں کراچی گیا ہوا تھا تو اس کا 22سالہ بیٹا شیخ عمرپھوپھی کو ملنے اس کے گھر گیا جہاں ملزمان نے اس کو قتل کر کے چھت سے گرنے کا بہانہ بنا دیا ہم لوگ جب تھانے گئے تو پولیس والوں نے ہماری بات سننے کی بجائے ہمیں ٹرخا کر تھانے سے نکال دیا ۔ پر اسرارہلاکت

مزید : علاقائی