یونین کونسل 143میں گائنی ہسپتال اور ٹیوب ویل کیلئے کوشاں ہوں ؛میاں محمد ارشد

یونین کونسل 143میں گائنی ہسپتال اور ٹیوب ویل کیلئے کوشاں ہوں ؛میاں محمد ارشد

لاہور(رپورٹ اقبال بھٹی۔ تصاویر ایوب ، اہتمام آصف شاہ)یونین کونسل 143سلامت پورہ کے چیئرمین میاں محمد ارشد اور جنرل کونسلر محمد حفیظ نے روزنامہ پاکستان کے فورم میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ میری سب سے پہلی ترجیح یہ ہے کہ میں اپنے علاقے میں گائنی کا ہسپتال بنواؤں مجھے پانچ سال ہوگئے ہیں اس کی جدوجہد کرتے ہوئے مگر کچھ ایسے ایشوز ہیں کہ یہ کام پایہ تکمیل تک نہیں پہنچ سکا۔گائنی کاہسپتال نہ ہونے کی وجہ سے ایک سال میں دو خواتین زچگی کے دوران طبی امداد نہ ملنے کی وجہ سے وفات پا گئی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہسپتال کے لئے پلاٹ میسر ہے جو کہ آبادی دیہہ کی طرف سے محکمہ صحت کو وقف کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کنال بینک ہاؤسنگ سکیم میں پانی کے پائپ بچھائے جا چکے ہیں مگر ٹیوب ویل ابھی تک نہیں لگایا گیا اس حوالے سے ایم ڈی واسا نے یقین دہانی کرائی ہے کہ اپریل کے آخری ہفتے تک نیا ٹیوب ویل لگا دیا جائے گا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ سب سے بڑا مسئلہ پانی کی نکاسی کا ہے اصولی طور پر ہر یونین کونسل میں چالیس کے قریب سینٹری ورکر ہوتے ہیں مگر ہماری یونین کونسل میں 22سینٹی ورکر ہیں جس کی وجہ سے صفائی کے انتظامات میں بڑی مشکلات کا سامنا ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہمارے علاقے میں دو فلٹریشن پلانٹ لگائے گئے ہیں جو کہ پانچ سال گزرنے کے باوجود ان کے فلٹر تبدیل نہیں کئے گئے جبکہ ہر 4سال بعد ان کے فلٹر تبدیل کر دیئے جاتے ہیں۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ آپ کے پاس کیا اختیارات ہیں تو انہوں نے کہا کہ ابھی تک ہمارے پاس شناختی کارڈ کی تصدیق کرنے کے اختیارات ہیں جب ان سے پوچھا گیا کہ آپ نے ابھی تک اپنے علاقے میں کیا کام کئے ہیں تو انہوں نے میں نے اب تک پانچ ہزار فٹ سیوریج کے پائپ ڈلوائے ہیں جس سے معیز ٹاؤن ، تاج محل پارک سلامت پورہ کے علاقے مستفید ہورہے ہیں جبکہ صاف پانی کے پائپ سلامت پورہ کے علاقے میں سات ہرار فٹ کے قریب لگوا دیئے گئے ہیں۔جس سے پچاس ہزار نفوس کے قریب آبادی مستفید ہو رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنی یونین کونسل میں ایک اور اچھا کام کیا ہے کہ موت کے سرٹیفکیٹ فری آف کاسٹ کردیئے گئے ہیں نادرا کے پیسے بھی ہم اپنی جیب سے ادا کرتے ہیں۔ا نہوں نے کہا کہ میرے علاقے میں اب تک الیکٹرک سٹی کے حوالے سے 6نئے ٹرانسفارمر لگائے گئے ہیں اور فورکور کی تار پورے علاقے میں بچھا دی گئی ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ہمارے یونین کونسل لاہور کی پہلی یونین کونسل ہے جو کہ دو یونین کونسل کو ملا کر ایک بنائی گئی ہے۔ اس پر بہتری یہ آئی ہے کہ پہلے ہمیں کئی جگہوں پر جانا پڑتا تھا اور اب ہم ایک ہی جگہ بیٹھ کر تمام کام نپٹا لیتے ہیں ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1