پاکستان اور جنوبی افریقہ کے مابین مضبوط دفاعی تعلقات

پاکستان اور جنوبی افریقہ کے مابین مضبوط دفاعی تعلقات

جوہانسبرگ۔۔۔۔۔۔۔فہیم شبیر سے:

پاکستان اور جنوبی افریقہ بہت سے مسائل کو مشترکہ طور پر حل کرنے کیلئے کام کر رہے ہیں جس میں اہم جدیدٹیکنالوجی کا تبادلہ بھی ہے،اسلام آباد کے حالیہ دورہ کے دوران جنوبی افریقہ کی وزیر دفاع(نوسیوی ماپیسا ن) Mapisa Nqakula نے اپنے پاکستانی ہم منصب وزیر دفاع خواجہ آصف سمیت دیگر اعلیٰ سرکاری حکام سے ملاقات کی،اس موقع پر جنوبی افریقہ کی وزیر دفاع نے کہا کہ ہم دہشت گردی کی لعنت سے نمٹنے کے لئے پاکستان کی مہارت سے فائدہ اٹھانا چاہتے ہیں،ہم دنیا کو پر امن دیکھنا چاہتے ہیں اور دہشتگردی کا شکار ممالک کے ساتھ ہیں،اپنے ملک کو محفوظ بنانے کیلئے دوسرے ممالک سے سیکھنا ہے،پاکستانی وزیر دفاع خواجہ آصف نے جنوبی افریقہ کی وزیر دفاع کا خیر مقدم کیا اور کہا کہ پاکستان اور جنوبی افریقہ کے درمیان دفاعی تعلقات دن بدن مزید مضبوط ہو رہے ہیں، پاکستان جنوبی افریقہ کے نیشنل ڈیفنس فورسز خاص طور پر جنوبی افریقہ کے ایئر فورس کے پائلٹوں کو تربیت فراہم کرنے کے لئے تیار ہے۔انہوں نے اس بات کی طرف اشارہ بھی کیا کہ پاکستان موثر سرحدی کنٹرول اور انتظام میں دو طرفہ تعاون کا خیر مقدم کرے گا۔دونوں ممالک کے ’’دہشت گردی روکنے‘‘کے لیے مل کر کام کریں گے۔جنوبی افریقہ کی وزیر دفاع Mapisa۔Nqakula نے پاکستان کے وزیر دفاعی پیدوار رانا تنویر حسین اور چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ سے بھی ملاقات کی ،انہوں نے اس دورے کے دوران کئی دفاعی اور صنعتی تعاون کے معاہدوں پر بھی دستخط کئے۔اس سے قبل جنوبی افریقہ کے چیف نیشنل ڈیفنس فورسز جنرل S.Z. Shokeنے مارچ 22۔25، 2017 تک پاکستان کا دورہ کیا اورسٹاف کمیٹی کے چیئرمین جوائنٹ چیفس کے علاوہ پاکستان آرمی، نیوی اور ایئر فورس کے تینوں سروس چیفس کے ساتھ ملاقات کی۔ انہوں نے 23 مارچ نیشنل ڈے پریڈ میں بھی شرکت کی۔ان دوروں نے پاکستان اور جنوبی افریقہ کی سیاسی، سفارتی، تجارت، سرمایہ کاری اور دفاعی شعبوں میں دو طرفہ تعاون میں مسلسل پیش رفت کی ہے۔وزیر دفاعی پیداوار خواجہ آصف اور چیف آف آرمی سٹاف نے 2016اور2017میں جنوبی افریقہ کا دورہ کیا ،پاکستان ایرو اسپیس اینڈ ڈیفنس نمائش میں حصہ لیا ۔جنوبی افریقہ کے نائب وزیر دفاع نے بھی آئیڈیاز 2016 میں شرکت کے لیے پاکستان کا دورہ کیاتھا۔

مزید : عالمی منظر