دہشتگردی مذمتی بیان جاری کرنے سے ختم نہیں ہو گی:طاہر القادری

دہشتگردی مذمتی بیان جاری کرنے سے ختم نہیں ہو گی:طاہر القادری

لاہور(سٹی رپورٹر)پاکستان عوامی تحریک کے قائد ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے بیدیاں روڈ لاہور خودکش دھماکے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ قوم اپنے بچوں کی لاشیں کب تک اٹھاتی رہے گی۔ کون ہے جو پنجاب میں فوجی آپریشن نہیں ہونے دے رہا؟ اور اس حوالے سے قوم کے ساتھ بار بار غلط بیانی کیوں کی جاتی ہے؟ جب تک پنجاب میں آپریشن نہیں ہو گا دہشتگردی ہوتی رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ انتہائی حساس علاقے میں خودکش حملے کے ذریعے دہشت گردوں نے پیغام دیا ہے کہ وہ اپنے ناپاک ارادوں پر عمل کرنے کے لیے مکمل آزاد ہیں اور ان کے راستے میں کوئی رکاوٹ نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ خودکش حملے میں فورسز کے جوان اور سویلین کی شہادت پر دلی دکھ اور افسوس ہے انہوں نے کہا کہ دہشتگردی محض عزم کرنے سے اور مذمتی بیانات جاری کرنے سے ختم نہیں ہو گی اس کے لیے وزیرستان کی طرز پر پنجاب میں آپریشن کرنا ہو گا۔ اس کے لیے تمام وسائل ،طاقت اور فیصلے بلاتاخیر بروئے کار لانا ہونگے۔ سربراہ عوامی تحریک نے کہا کہ نئے سال میں درجن سے زائد دھماکے ہو چکے جن میں پارا چنار سبزی منڈی، پنجاب اسمبلی، پشاور مہمند، درگاہ لعل شہباز قلندر،آوران، چارسدہ، ڈیفنس لاہور، شبقدر شامل ہیں اور ان میں سینکڑوں شہید اور سینکڑوں زخمی ہوئے۔ ہر دھماکے کے بعد ایک روایتی الفاظ پر مشتمل بیان جاری کر دیا جاتا ہے اور قومی ایکشن پلان کا ذکر بھی سننے کو مل جاتا ہے۔ دھماکے اگلے روز ہی حکمران سب کچھ بھول جاتے ہیں۔ انہوں نے بیدیاں روڈ دھماکے کے زخمیوں کی جلد صحت یابی کیلئے دعا کی۔

مزید : صفحہ آخر