پانامہ کیس کا فیصلہ فوج سمیت سب کو قبول ہوگا سعودی اتحاد میں راحیل شریف کی تقرری ریاست کا فیصلہ ہے ، ترجمان پاک فوج

پانامہ کیس کا فیصلہ فوج سمیت سب کو قبول ہوگا سعودی اتحاد میں راحیل شریف کی ...

لندن ( مانیٹرنگ ڈیسک /آن لائن) ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ پانامہ کیس کا جو بھی فیصلہ آ یا وہ فوج سمیت سب کو قبول ہوگا لندن میں پاکستانی ہائی کمشنر سید ابن عباس کے ساتھ صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ سعودی اتحاد میں جنرل (ر) راحیل شریف کی تقرری پاکستانی ریاست کا فیصلہ ہے، پاکستان سعودی عرب اورایران کے ساتھ اچھے تعلقات چاہتا ہے۔ پاک فوج دنیا کی واحد فوج ہے جس نے دہشتگردی کو شکست دی، آپریشن ردالفساد دہشتگردوں کے سہولت کاروں کے خلاف شروع کیا گیا ہے جس کے نتائج جلد آنا شروع ہوں گے۔ ٓپریشن کے تحت مدرسہ اصلاحات پرکام ہورہا ہے اور اصلاحات کیلئے مدارس اور دیگر تعلیمی اداروں کو شارٹ لسٹ کرلیا گیا ہے۔ پاکستان بھارت اور افغانستان سے اچھے تعلقات کا خواہاں ہے۔ پاکستان پراکسی وارپریقین رکھتا ہے اور نہ ہی خطے میں کشیدگی چاہتا ہے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پانامہ کیس کا جو بھی فیصلہ آ یا وہ فوج سمیت سب کو قبول ہوگا�آاپریشن ردالفسادکے نتائج جلد سامنے آنا شروع ہوں گے ۔پاک فوج دنیا کی واحد فوج ہے جس نے دہشتگردی کو شکست دی۔ مدرسہ اصلاحات پر تیزی سے کام ہو رہا ہے۔جنرل راحیل شریف کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ ان کی اسلامی ممالک کی افواج کی سربراہی کا معاملہ فائنل ہو چکا ہے تاہم پاکستانی دستے سعودی عرب سے باہر نہیں جائیں گے۔آرمی چیف کے دورہ برطانیہ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ آرمی چیف کا دورہ برطانیہ کامیاب رہا ،پاکستان نے برطانیہ کو تحفظات سے آگاہ کر دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دہشتگردی کے خلاف جنگ شروع میں ہماری نہیں تھی، امریکہ نے روس کے خلاف ہمیں استعمال کیا، طالبان بنائے گئے لیکن بعد میں حالات ٹھیک کئے بغیر امریکی چلے گئے۔ امریکہ نے ہمیشہ کی طرح ہمیں اب بھی اکیلا چھوڑ دیا ہے۔ ستر سال سے یہی سنتے آ رہے ہیں کہ پاکستان مشکل وقت سے گزر رہا ہے، یہ ابھی تک مشکل وقت سے ہی گزر رہا ہے لیکن اب ہماری راہ متعین ہو گئی ہے۔

مزید : صفحہ اول