ڈیورنڈ لائن پرباڑکی مذمت‘ ملکی خود مختاری کا دفاع کرینگے: افغانستان

ڈیورنڈ لائن پرباڑکی مذمت‘ ملکی خود مختاری کا دفاع کرینگے: افغانستان

کابل(اے این این) افغانستان نے پاکستان کی طرف سے ڈیورنڈ لائن پر باڑ لگائے جانے کو یکطرفہ اقدام قرار دیتے ہوئے دھمکی دی ہے کہ اگر ہمسایہ ملک کی طرف سے یکطرفہ سرگرمیاں اور خلاف ورزیاں جاری رکھی گئیں تو افغان فوج ملکی خودمختاری کے دفاع کیلئے تیار ہے۔ افغان وزارت خارجہ کے ترجمان احمد شکیب مستغنی نے کابل میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ افغان حکومت پاکستان کی طرف سے ڈیورنڈ لائن کے ساتھ یکطرفہ اقدام کی مذمت کرتی ہے اگر پاکستان نے اس طرح کی یکطرفہ سرگرمیوں اور خلاف ورزیوں کا سلسلہ جاری رکھا تو افغان نیشنل ڈیفنس اینڈ سیکورٹی فورسز ملکی خودمختاری کا دفاع کرنے کیلئے تیار ہیں۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ پاکستان نے ننگرہار، کنڑ، خوست، پکتیا، زابل اور قندھار سمیت دیگر علاقوں میں متعدد بار خلاف ورزی کی ہے۔افغان حکومت نے ڈیورنڈ لائن پر ہونے والی ان خلاف ورزیوں پر احتجاج کیلئے ہمیشہ سفارتی راستہ اختیار کیا اور اقوام متحدہ اور سلامتی کونسل میں معاملہ اٹھایا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی طرف سے کی جانے والی سرگرمیوں اورخلاف ورزیوں میں توپ خانے سے گولہ باری، بمباری، راستے بند کرنا اور باڑ کی تعمیر شامل ہے۔ ترجمان نے کہاکہ ڈیورنڈ لائن ایک تاریخی مسئلہ ہے اور ڈیورنڈ لائن کے دونوں اطراف مقیم لوگوں کے سوا کوئی حکومت اس کا فیصلہ نہیں کرسکتی۔احمد شکیب مستغنی نے کہاکہ ڈیورنڈ لائن کی خلاف ورزیاں اقوام متحدہ کے منشور کی واضح خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے اس بات کی نفی کی کہ کسی سربراہ اجلاس میں ڈیورنڈ لائن کا معاملہ زیر غور آیا۔ انہوں نے کہاکہ لندن میں افغان ،پاکستانی اور برطانوی حکام کے سہ فریقی اجلاس میں افغان حکومت کی بنیادی توجہ پاکستان کو فراہم کی گئی دہشت گردوں کی فہرست پر رہی۔

مزید : کراچی صفحہ اول